سپریم کورٹ میں آج پانامہ کیس کی سماعت‘ حکومت جے آئی ٹی رپورٹ چیلنج کرے گی

17 جولائی 2017

اسلام آباد (نوائے وقت رپورٹ) جے آئی ٹی کی رپورٹ پر سپریم کورٹ کا 3رکنی پانامہ عملدرآمد بنچ آج سماعت کرے گا۔ سیاسی گرما گرمی عروج پر پہنچ گئی، وزیراعظم نوازشریف اور ان کے خاندان سمیت34 افراد سے تحقیقات کے بعد جے آئی ٹی نے اپنی رپورٹ عدالت عظمیٰ میں جمع کرائی تھی۔ ذرائع کے مطابق حکومت جے آئی ٹی رپورٹ کو عدالت میں چیلنج کرے گی۔ اپوزیشن کے بڑے وفد نے سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ کیا ہے، اس حوالے سے پیپلز پارٹی نے بھی وفد بھیجنے پر رضا مندی ظاہر کر دی ہے۔ پیپلزپارٹی، پی ٹی آئی، ایم کیو ایم، جماعت اسلامی سمیت چھوٹی بڑی سب جماعتیں اکٹھی ہیں اور وزیراعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر رہی ہیں جبکہ اے این پی اور عوامی وطن پارٹی نے سپریم کورٹ کے فیصلے کا انتظار کرنے کا مشورہ دیا ہے۔ دن میں کئی مشاورتی اجلاسوں میں سیاسی وقانونی جوابی حکمت عملی کی تیاری جاری ہے۔ وزیراعظم نے پہلے اپنی کابینہ سے بھرپور اعتماد حاصل کرکے اپوزیشن کے استعفیٰ کے مطالبے کو یکسر مسترد کردیا۔ جیسے جیسے وقت گزر رہا ہے سیاسی درجہ حرارت بڑھتا جا رہا ہے۔ تجزیہ کار کہتے ہیں سیاسی چالیں اپنی جگہ لیکن فیصلہ سیاسی اکھاڑے کی بجائے اب سپریم کورٹ میں ہی ہو گا۔ سپریم کورٹ میں سماعت کیلئے تیاریاں مکمل کی جا چکی ہیں‘ عدالت کے سکیورٹی انتظامات مزید سخت کر دئیے گئے ہیں۔
پانامہ کیس