کنٹونمنٹ بورڈ کی جانب سے ٹائر بازار صدر میں تجاوزات کیخلاف آپریشن

15 مارچ 2018

راولپنڈی (محمدر ضوان ملک /نیوزرپورٹر) کنٹونمنٹ بورڈ راولپنڈی کی جانب سے صدر کشمیر روڈ پر ٹائر بازار میں تجاوزات کے خلاف آپریشن کے دوران تاجر بپھر گئے اور کینٹ انتظامیہ کے خلاف احتجاجا دکانیں بند کر کے احتجاج شروع کر دیا۔ احتجاج کا آغاز بدھ کو نماز عصر کے بعد اس وقت شروع ہوا جب تجاوزات کے خلاف آپریشن کے دوران دکانداروں اور عملے میںجھڑپ ہوگئی۔ اس موقع پر تاجروں نے سخت احتجاج کرتے ہوئے حیدر روڈ ، بنک روڈ، کشمیر روڈ اور آدم جی روڈ پر دکانیں بند کردیں اور کینٹ انتظامیہ کے روئیے کے خلاف ٹائر جلا کر احتجاج شروع کر دیا۔ تاجروں نے بنک روڈ چوک اور کشمیر روڈپر واران اڈہ چوک کے قریب ٹائر جلا کر ٹریفک روک دی ۔ تاجروں کا یہ احتجاج مغرب تک جاری رہا۔ بعد ازاں انتظامیہ کے ساتھ کامیاب مذاکرات کے بعد تاجر پرامن طور پر منتشر ہوگئے۔ مذاکرات میں فیصلہ ہوا کہ جمعرات کو تمام فریقین کنٹونمنٹ بورڈ کے دفتر میں آئیں گے اور تاجروں کے ساتھ ہونے والی زیادتی کا ازالہ کرتے ہوئے ان کا ضبط شدہ سامان واپس کیا جائے گا۔ مرکزی انجمن تاجراں کینٹ کے جنرل سیکرٹری ظفر قادری نے ’’نوائے وقت‘‘سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ کینٹ بورڈ کے عملے نے تجاوزات کے خاتمے کی آڑ میں ٹائر مارکیٹ میںدکانوں کے اندر سے ٹائر اٹھانے شروع کردئیے۔ اس موقع پر بازار میں ریڑھیوں کو چھوڑ کر دکانوں کے سامنے سے جنریٹر بھی اٹھانا شروع کر دئیے۔ جس پر دکانداروں نے شدید احتجاج کیا۔ لیکن کینٹ بورڈ کے عملے نے تاجروں کی ایک نہ سنی۔ جس پر دکانداراس زیادتی کے خلاف احتجاج پر مجبور ہوگئے۔ انہوںنے دکانیں بند کر کے احتجاج کیا۔ کینٹ بورڈ کے ترجمان قیصر محمود نے ’’نوائے وقت ‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ کشمیر روڈ پر جہاں ٹائروں کی دکانیں ہیں وہاں اکثر یہ لوگ سڑک کے درمیان ٹائر تبدیل کرنا شروع کر دیتے ہیں جس کی وجہ سے وہاں اکثر ٹریفک جام رہتی ہے۔ عدالت کی طرف سے تجاوزات کے خاتمے کی ہدایات ہیں ۔ انہوںنے کہا صدر میں ٹریفک کی روانی برقراررکھنے کے لئے تجاوزات کے خلا ف آپریشن ضروری ہے۔