سینیٹ الیکشن: کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال مکمل،18امیدواروں کے کاغذات مسترد

14 فروری 2018

اسلام آباد (خصوصی نمائندہ) سینیٹ انتخابات چاروں صوبوں میں امیدواروں کی کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کا عمل مکمل ہوگیا۔ چاروں صوبوں میں 104 امےدواروں کے کاغذات نامزدگی درست قرار، 18امےدواروں کے کا غذات نامزدگی مسترد کر دےے گئے۔ خیبرپختونخواہ سے دو، سندھ سے چار،بلوچستان سے پانچ اور پنجاب سے سات امیدواروں کے کاغذات مسترد ہوئے صوبائی ریٹرننگ افسران نے امیدواروں کی حتمی فہرست مرکزی الیکشن کمیشن کو بھیج دی ۔ خیبرپختونخواہ میں 34 میں سے 2 امیدواروں جنرل نشستوں کے لیے ظفر اللہ خٹک اور علی خان کے کاغذات مسترد ہوئے سندھ میں سینیٹ انتخابات کے 47 میں سے 5 امیدواروں کے کاغذات نامزدگی مسترد ہوئے، جنرل نشستوں کے لیے ایم کیو ایم کے عامر ولی الدین چشتی اور پاک سرزمین پارٹی کے حسن صابر کے کاغذات نامزدگی مسترد ہوئے، ٹیکنوکریٹ کی نشست پر ایم کیو ایم کے احمد چنائے اور پاک سر زمین پارٹی کی صوفیہ سعید کے کاغذات بھی نامزدگی مسترد ہوئے سےنےٹ انتخابات بلوچستان سے27میں سے چار امیدواروں کے کاغذات نامزدگی مسترد ہوئے جن میں تین ٹیکنوکریٹ اور 1 خواتین نشست کی ہیں، ٹیکنوکریٹ میں سے حسین اسلام، محمد عبدالقادر، اور نسیب للہ بازئی جبکہ خواتین کی نشست پر طاہرہ خورشید کے کاغزات نامزدگی مسترد ہوئے۔ پنجاب سے 34 میں سے سات امیدواروں کے کاغذات مسترد ہوئے جس میں جنرل نشستوں پرمحمد بلال بٹ،عثمان خان زئی، سرفراز قریشی اور ٹیکنوکریٹ پر عبدالکریم شامل ہیں ، سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے جنرل اور ٹیکنوکریٹ نشستوںکےلئے جمع کروائیے گئے دونوں کاغذات مسترد کر دیئے گئے۔صوبائی ریٹرننگ افسران نے جانچ پڑتال کا عمل مکمل کر نے کے بعدامیدواروںکی حتمی فہرست مرکزی الیکشن کمیشن کو بھیج دی ۔امیدوار ریٹرننگ افسران کے فیصلوں کے خلاف 15 فروری تک اپیلیں دائرکرسکیں گے۔اور 17 فروری کو اپیلٹ ٹریبونلز اپیلوں پر فیصلے سنائیں گے اور پولنگ 3مارچ کو ہوگی۔