عالمی برادری اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے‘ بھارتی ریاستی جبر سے متاثرہ کشمیریوں کا علاج کرانے کیلئے تیار ہیں : نوازشریف

07 اگست 2016

اسلام آباد (اے پی پی+ نمائندہ خصوصی+ نیوز ایجنسیاں) وزیر اعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر میں بھارتی سکیورٹی فورسز کے ریاستی جبرسے متاثرہ کشمیریوں کے علاج معالجے کیلئے انتظامات کا خواہاں ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان خصوصی طور پر پیلٹ گن کے متاثرین کی آنکھوں کا دنیا میں کہیں بھی دستیاب طبی سہولیات کے ذریعے علاج کرانا چاہتا ہے، وزیراعظم نے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ بھارت پر اپنا اثر رسوخ استعمال کرے تاکہ پاکستان مقبوضہ وادی میں حالیہ جاری انسانی بحران کے تناظر میں متاثرین کے علاج معالجہ کا اہتمام کرسکے ۔پریس ریلیز کے مطابق وزیر اعظم نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی بحران کی شدت نے ہمیں مجبور کر دیا ہے کہ ہم متاثرین کے علاج معالجے کیلئے فوری طور پر اپنے مادی اور انسانی وسائل کو بروئے کار لا ئیں، انہوں نے کہاکہ ظلم کی حد یہ ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں بنیادی صحت کی سہولیات فراہم کرنے والے افراد اوراداروں کو بھی متاثرین کے مناسب علاج معالجے کی اجازت نہیں دی جارہی۔ وزیر اعظم نے کہا کہ بھارتی سیکیورٹی فورسز پر امن اور نہتے بے گناہ مظاہرین کو علاج معالجہ فراہم کرنیوالے ہسپتالوں اور ایمبو لینس گاڑیوں کو بھی نشانہ بنا رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بصارت سے محرومی متاثرہ افراد اور انکے خاندانوں کیلئے سنگین نتائج کا باعث بنتی ہیں ، پیلٹ بندوقوں سے متاثرہ افراد میں سے بعض شاید دوبارہ کبھی روشنی نہیں دیکھ پائیں گے تاہم اس کے باوجود وہ ابھی بھی آزادی کی روشنی سے رہنمائی حاصل کرتے ہوئے اپنے حق خودارادیت کیلئے پرعزم ہیں اوردنیا کواس کا احساس کرنا چاہئے ۔وزیراعظم نے کہاکہ پاکستان کشمیریوں کی اخلاقی ، سیاسی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا ۔ وزیر اعظم نے وزارت امور خارجہ کو ہدایت کی کہ وہ بھارت پر دباﺅ ڈالنے کیلئے بیرون ملک پاکستانی مشنز کے ذریعے بین الاقوامی سیاسی قیادت ، انسانی حقوق کی تنظیموں اور سول سوسائٹی کی حمایت کو متحرک کرے تاکہ وہ حکومت پاکستان کو مقبوضہ کشمیر میں انسانی بنیادوں پر متاثرین کے علاج معالجہ کا اہتمام کرنے کی اجازت دیں ۔ انہوں نے وزارت کو مزید ہدایت کی کہ حکومت پاکستان متاثرین کے علاج معالجہ کے تمام سفری‘ قیام اور دیگر اخراجات کا انتظام کرے گی۔وزیراعظم نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جارحیت پر عالمی برادری سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ وزیراعظم نوازشریف کا کہنا ہے کہ بھارت کشمیر میں مسلسل انسانی حقوق کی خلاف ورزی کررہا ہے جو کہ پاکستان کو طبی امداد فراہم کرنے پر مجبور کررہی ہے۔ وزیراعظم نوازشریف نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارت نے ریاستی آپریشن کے ذریعے شہریوں کو چھلنی کیا۔ انہوں نے کہ پاکستان کی جانب سے معصوم کشمیریوں کو امداد کے لیے عالمی برادری اپنا اثرو رسوخ استعمال کرے۔دریں اثناءوزیراعظم نواز شریف نے ہدایت کی ہے کہ بجلی کی پیداوار میں اضافے کیلئے شروع کیے گئے تمام منصوبے بروقت مکمل کیے جائیں،منصوبوں کی تکمیل میں کسی قسم کی تاخیر برداشت نہیں کی جائے گی، ذاتی طور پر خود ان تمام منصوبوں کی نگرانی کروں گا اور ہر 15دن کے بعد ان منصوبوں کی پیش رفت جائزہ لیا جائے گا، جتنے پاور پراجیکٹس پر کام جاری ہے، ان کا دورہ کرونگا اور اس بات کو یقینی بنایا جائے گا کہ تمام منصوبے مکمل ہوسکیں۔انہوں نے یہ بات وزیراعظم ہاﺅس میں اعلیٰ سطح کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی جس میں وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف،وزیر پانی و بجلی خواجہ آصف ،وزیر پٹرولیم شاہد خاقان عباسی، سیکرٹری پانی و بجلی یونس ڈھاگہ سمیت اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔
نوازشریف