سڑکوں کے ناموں کا انتخاب سٹی کونسل کا کام ہے‘ محفوظ النبی خان

31 جنوری 2018

کراچی ( اسٹاف رپورٹر ) سڑکوں کے ناموں کا انتخاب قانوناً اور روایتاً بلدیہ عظمیٰ کی کونسل کے دائرہ کار میں ہوتا ہے ۔ صدر مملکت ، میئر کراچی یا کوئی بھی شخصیت ان اختیارات کو استعمال نہیں کرسکتے۔ ان تاثرات کا اظہار سول سوسائٹی کے نمائندگان نے رابطہ فکر فردا کے زیر اہتمام تجزیاتی نشست میں کیا ہے جس کی صدارت تھنک ٹینک کے کنونئر محفوظ النبی خان نے کی جبکہ راہ راست فائونڈیشن کے آغا سید عطاء اللہ شاہ ، ممتاز ٹائون پلانر فرحت اللہ قریشی ، روٹری انٹرنیشنل کے مسعود عالم ، جونا گڑھ لائرز کونسل کے محمد صدیق بلوچ ، فرزندان پاکستان کے قاری محمد ادریس خان ، پاکستان کوئز سوسائٹی کے پروفیسر حافظ نسیم الدین و انور عباس، وفاقی اردو یونیورسٹی المنائی ایسوسی ایشن کے سید نسیم احمد شاہ ، اسٹوڈنٹس سوشل فورم کے نفیس احمد خان ، پاسٹ کونسلرز ایسوسی ایشن کے جاوید لطیف ، لائن ہارٹ یوتھ ایسوسی ایشن کے ابصار احمد اور پاکستان سوک سوسائٹی کے ڈاکٹر ذوالفقار حیدر تجزیاتی نشست کے شرکاء میں شامل تھے جنہوں نے گزشتہ دنوں صدر مملکت اور میئر کراچی کے اشتراک سے یونیورسٹی روڈ کے نام کو تبدیل کرنے کے اعلان کا جائزہ لیا ۔ ان نمایاں شخصیات میں سندھ و کراچی یونیورسٹیوں کے بانی وائس چانسلر پروفیسر اے بی اے حلیم ، اردو زبان کے عظیم شاعر جوش ملیہ آبادی ، ادیب شوکت صدیقی ، پہلی مسلم خاتون سفیر بیگم رعنا لیاقت علی خان ، ممتاز سائنسدان پروفیسر ڈاکٹر سلیم الزمان صدیقی ، معروف بینکار زاہد حسین ، محمد علی حبیب ، ممتاز حسن اور آغا حسن عابدی کے علاوہ پاکستان کے تناظر میں پہلی باظابطہ قرارداد کے مجوز شیخ عبدالمجیداور ممتاز قانون دان جسٹس اے آر کارنیلئیس ایسے یکتائے روزگار ہستیوں میں شامل ہیں۔