سندھ میں وی وی آئی پیز، وزار اور بیورو کریٹس سے کمانڈوز سکیورٹی واپس لینے کا حکم

 سندھ ہائیکورٹ سکھر بینچ نے صوبے میں وی وی آئی پیز ، وزرا اور بیورو کریٹس سے ایس ایس یو کمانڈوز سکیورٹی واپس لینے کا حکم دے دیا۔سندھ ہائیکورٹ سکھر بینچ کے جسٹس صلاح الدین اور جسٹس عبدالمبین لاکھو پر مشتمل دو رکنی بینچ نے بے امن کیس سے متعلق محفوظ فیصلہ سنایا جس میں عدالت نے آئی جی سندھ کو امن و امان قائم کرنے کے لیے جمع کرائے گئے پلان پر عمل کرانے کا حکم دیا۔عدالت نے کہا کہ سندھ حکومت ملٹری گریڈ اسلحے کی خریداری کے لیے بجٹ فراہم کرے، وی وی آئی پیز ، وزرا، بیورو کریٹس سے ایس ایس یو کمانڈوز سکیورٹی واپس لی جائے جب کہ ڈاکوؤں اور جرائم پیشہ افراد کے خلاف بھرپور آپریشن کے ساتھ دیگر ضروری اقدامات کیے جائیں۔عدالت نے حکم دیا کہ ہر جرم کی ایف آئی آر کے اندراج کو یقینی بنایا جائے،  تفتیش کو بہتر بنانے کے لیے فنڈز مختص کیے جائیں اور ہر ضلع میں ڈاکوؤں کے سرکی مقررہ قیمت متعلقہ ایس ایس پیز کو فراہم کی جائے۔اس کے علاوہ عدالت نے پبلک سیفٹی کمیٹی کو بھی فعال کرنے کا حکم دیا ہے۔