قائمہ کمیٹی برائے موسمیاتی تبدیلی کا اجلاس، دو قراردادیں منظور

09 ستمبر 2017

اسلام آباد (نوائے وقت نیوز) قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے موسمیاتی تبدیلی نے برما میں مسلمانوں کے قتل عام کی شدید مذمت کرتے ہوئے ایک قرار داد منظور کی ہے جس میں برما کی حکومت سے پرزور مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ برما میں مسلمانوں پر ہونے والے ظلم و ستم، تشدد اور بربریت کی روک تھام کیلئےاقدامات اٹھائے۔ قرار داد میںاقوام متحدہ اور عالمی برادری سے بھی مطالبہ کیا گیا کہ وہ برما کے مسلمانوں پر ظلم و ستم کو روکنے کیلئے برما حکومت پر اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے۔ قائمہ کمیٹی کا اجلاس جمعہ کو کمیٹی چیئرمین ڈاکٹر حفیظ الرحمٰن دریشک کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاو¿س میں منعقد ہوا جس میں وفاقی وزیر موسمیاتی تبدیلی سینیٹر مشاہد اﷲ خان سمیت کمیٹی کے ارکان قومی اسمبلی ملک اعتبار خان، سلمان حنیف، محمد معین وٹو، شائستہ پرویز، شہناز سلیم، مسرت احمد، نعیمہ کشور خان، خالدہ منصور، شاھجہان بلوچ، نگہت پروین اور عمران ظفر لغاری نے شرکت کی۔ قائمہ کمیٹی نے صوبہ پنجاب میں جنگلات میں کمی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت پنجاب محکمہ جنگلات کے ان اقدامات کا بھی جائزہ لیا جس کے تحت محکمے نے جنگلات کی کٹائی کی روک تھام سمیت صوبے میں جنگلات میں اضافے کیلئے کئے ہیں۔کمیٹی نے صوبہ پنجاب کے محکمہ جنگلات کو ہدایت کی کہ وہ ”گرین پاکستان پروگرام“ کے تحت کئے گئے اقدامات پر مبنی ایک تفصیلی رپورٹ کمیٹی کے سامنے پیش کرے۔ قائمہ کمیٹی کے راول ڈیم میں زہریلے مادے کے باعث ہلاک ہونے والی مچھلیوں کے بارے میں رپورٹ کے حوالے سے ایجنڈے آئٹم کو مو¿خر کرتے ہوئے آئندہ اجلاس میں سی ڈی اے، کیڈ ڈویژن، وزارت داخلہ اور آئی سی ٹی حکام کو بھی طلب کرلیا۔ شرکاءاجلاس کو وزارت موسمیاتی تبدیلی کے حکام نے حالیہ مون سون کے حوالے سے بھی بریفنگ دی۔