ادھار مانگ کر شرمندہ نہ کریں

ادھار مانگ کر شرمندہ نہ کریں

مکرمی! اگر آپ دکاندار ہیں تو آپ ادھار بھی دیتے ہونگے ، اور اگر دکاندار ادھار دیتے ہیں تو کافی دفعہ نقصان بھی اٹھاتے ہونگے۔ جس طرح ادھار دینا دکاندار کی مجبوری ہے ، اسی طرح ادھار لوٹانا کسٹمر کی ذمہ داری ہے ۔ پاکستان میں کسٹمر ادھار تو چکا دیتا ہے ، مگر کبھی کبھار انجانے میں بھول جاتا ہے۔دوکاندار اس چیز کا خیا ل کرتے ہوئے کہ کسٹمر سے بات نہ خراب ہوجائے ، اُنہیں بار بار ادھار لوٹانے کا نہیں کہہ سکتے ، جس سے کاروبار کو شدید نقصانکا سامنا کرنا پڑتا ہے۔اس مسئلے کے پیشِ نظر ،اب دوکاندار اپنے ادھا ر کی ساری تفصیلات ادھار ایپ میں رکھ سکتا ہے ۔ جووقفے وقفے سے اپنے کسٹمرز کو ایک ایس ایم ایس بھیجتی ہے تاکہ کسٹمرز کو یاد رہے اور ادھار کی وصولی آسان ہوجائے۔(اویس سلیم‘لاہور)