اساتذہ تنظیموں کا اجلاس، 31 اکتوبر سے احتجاجی تحریک شروع کرنے کا اعلان

لاہور (سٹاف رپورٹر) گرینڈٹیچرز الائنس پنجاب میں شامل تما م اساتذہ تنظیموںکی مرکزی مجلس عاملہ کا اجلاس چیئر مین محمد ظفر جمیل کی زیر صدارت گذشتہ روز ناصر باغ لاہور میں ہوا جس میں اساتذہ تنظیموں کے مرکزی صدور سید سجاد اکبر کاظمی، رانا عطاء محمد، رانا لیاقت علی، چودھری محمد صفدر، رانا سلطان محمود، ظفر اقبال روانہ، محمد اسلم گھمن سمیت سینکڑوں اساتذہ نمائندگان نے بھرپور شرکت کی۔ اجلاس میں مختلف قراردادیں منظور کی گئیں جن میں کہا گیا کہ محکمہ تعلیم پنجاب کا عمومی رویہ تعلیم کش اور معلم دشمن ہے۔ اساتذہ شدید کرب اور بے چینی کا شکار ہیںلہٰذا اب اساتذہ بچائو تحریک شروع کرنے کا وقت ہے اسلئے گرینڈ ٹیچرز الائنس نے مشترکہ طور پر فیصلہ کیا ہے کہ 31 اکتوبر سے احتجاجی تحریک کا باقاعدہ آغاز کردیا جائے۔ اس ضمن میں پہلا پروگرام 31 اکتوبر کو پنجاب کے ہر ضلع میں پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہروں سے شروع ہوگا جس کے بعد ہر ڈویژنل ہیڈکوارٹر پر احتجاجی جلسے ہونگے۔ ہم آج احتجاج کی نئی روایت کا آغاز کر رہے ہیں۔ یہ روایت اساتذہ پرکسی جانے زنجیروں کی تمثیل اساتذہ کی ہاتھوں سے بنائی گئی ایک انسانی زنجیر سے کی گئی، اساتذہ ناصر باغ سے پہلے سپریم کورٹ تک اور پھر پنجاب اسمبلی مال روڈ تک نہایت منظم انداز میں پر امن طور پر مکمل کیا۔ گرینڈ ٹیچرز الائنس کے قائدین نے کہا کہ ہم آئندہ بھی حتی المقدور کوشش کریں گے کہ اپنا علم دوستی کا پیغام ہر فرد اور ہر طالب علم تک ایسے پہنچائیں کہ نہ ہمارا تدریسی عمل متاثر ہو اور نہ کسی کو کوئی تکلیف پہنچے۔ ہم اس قوت سے حکومت کی بنیادیں ہلا دینگے۔