پاکپتن میں کمسن لڑکی سے زبردستی شادی رکوا دی گئی، دولہا، نکاح خواں اور باراتی فرار

لاہور+ پاکپتن (لیڈی رپورٹر+ نامہ نگار) کمسن لڑکی کے ساتھ 20 سالہ شخص کی شادی پر پولیس کا چائلڈ پروٹیکشن بیورو کے ہمراہ چھاپہ، شادی رکوا دی۔ پولیس اہلکار باراتیوں کے لئے بنائے گئے پکوان پر ٹوٹ پڑے۔ گائوں 107/D کی رہائشی بیوہ شمیم بی بی نے 13 سالہ بیٹی کرن شیخ کی شادی ساہیوال کے علاقے فرید گنج کے 20 سالہ شخص فیاض احمد کے ساتھ طے کی۔ فیاض احمد بارات لے کر آیا جہاں کا نکاح ہو رہا تھا کہ تھانہ ڈلوریام کی پولیس نے چائلڈ پروٹیکشن بیورو ملتان کے افسر سمیع اللہ کے ہمراہ ریڈ کر کے شادی کو رکوا دیا۔ باراتی اور نکاح خواں موقع سے بھاگ گئے۔ کئی اہلکار بچا ہوا پکوان بھی اٹھا کر ساتھ لے گئے۔ پولیس نے شمیم بی بی، دولہا، دولہے کے والد نعیم، ارشد، لطیف اور اشرف وغیرہ کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔ مزید برآں چیئرپرسن چائلڈ پروٹیکشن بیورو صبا صادق نے کہا کہ بچی کو لاہور میں منتقل کیا جا رہا ہے جہاں بچی کو ہر قسم کا تحفظ مہیا کیا جائے گا۔