ننکانہ کی تعلیمی حالت

ننکانہ کی تعلیمی حالت

مکرمی! ہم وکلا برادری آپکے موقر روزنامے کے توسط سے وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہبازشریف، وزیر تعلیم رانا مشہود احمد خان اور سیکرٹری ہائرایجوکیشن کی توجہ ننکانہ صاحب میں محکمہ تعلیم کی انتہائی ناگفتہ بہ حالت کی جانب دلانا چاہتے ہیں جہاں سینکڑوں بچوں کا تعلیمی مستقبل داﺅ پر لگ گیا ہے اور اسکے ذمہ دار کوئی اور نہیں وہاں کے محکمہ تعلیم کے اعلیٰ حکام میں ہیں جو اپنی کرپشن کیلئے معصوم بچوں کے تعلیمی مستقبل سے کھیل رہے ہیں ان میں اہم ترین افسر وہاں کے ڈپٹی ڈائریکٹر کالجز ہیں جو اپنی کرپشن کی وجہ سے ضلع بھر میں مشہور ہیں۔ صوبائی محتسب پنجاب نے بھی ڈپٹی ڈائریکٹر کالجز کو اس سیٹ کیلئے نا اہل قرار دیا ہوا ہے۔ لیکن اسکے باوجود وہ یہیں براجمان ہیں۔ ہم نے تمام اعلیٰ حکام کو بھی تحریری درخواستیں ارسال کی ہیں۔ ہم خواہ مخواہ کسی پر تنقید نہیں کر رہے اور نہ ہمارا مقصد کسی کی کردار کشی ہے۔ لیکن مذکورہ افسران نے اپنی کرپشن کی وجہ سے حقیقت میں ننکانہ میں تعلیم کے شعبہ کو تباہی کے دھانے پر لا کھڑا کیا ہے۔ وزیراعلیٰ صاحب آپ آزادانہ انکوائری کمشن تشکیل دےکر تحقیقات تو کروائیں ۔ہمارے معصوم بچوں اور مستقبل کے معماروں کا تعلیمی مستقبل تباہ ہونے سے بچا لیں۔ ہم تحقیقات میں مکمل تعاون کرینگے۔ (محمد صدیق ڈوگر ایڈووکیٹ اور دیگر فون نمبر 0300-4308234 )