صنفی تشدد کیخلاف 16روزہ مہم کا آغاز کل سے ہو گا

لاہور (رفیعہ ناہیداکرام) پاکستان سمیت دنیا بھر میں خواتین پر تشدد کیخلاف 16روزہ مہم کا آغاز کل25 نومبرسے ہوگا۔ یہ مہم 10دسمبر (انسانی حقوق کے عالمی دن) تک جاری رہے گی۔ اس مہم کا مقصد عوام الناس کو خواتین پر گھریلو تشدد، جسمانی تشدد، جنسی طور پر ہراساں کرنے، دفاتر ، نیم سرکاری، صنعتی، کاروباری ، تجارتی و دیگر اداروں میں کام کے دوران صعوبتوں سے نجات اور ان کے مسائل کے متعلق آگاہی اور شعوروبیداری پیدا کرناہے۔ اس حوالے سے گزشتہ روزصوبائی دارالحکومت لاہور میں پریس کلب میں وائٹ ربن کیمپین کے زیراہتمام وویمن ڈویلپمنٹ کی صوبائی وزیرحمیدہ وحیدالدین ، وویمن کمیشن کی چیئرپرسن فوزیہ وقار، پنجاب اسمبلی ویمن پارلیمنٹری کاکس کی چیئرپرسن فرزانہ نذیر اور وائٹ ربن کیمپین کے کنٹری ہیڈ عمرآفتاب نے کہاکہ خواتین کو بااختیار بنائے بغیر کوئی معاشرہ ترقی نہیں کر سکتا، شرکاء نے اس موقع پر حکومت پنجاب کے خواتین کم عمری کی شادی، وراثت میں حصہ، صنفی تشدد ، نکاح نامے کو درست طریقے سے پر کرنا اور دیگر اقدامات پر تفصیلی روشنی ڈالتے ہوئے کہاکہ آگاہی مہم کے سلسلے میں ٹی وی اور ریڈیو پرآگاہی کے لیے خصوصی پروگرامز اور پیغامات نشر کئے جائیں گے۔ واضح رہے کہ خواتین پرتشدد کاسلسلہ درازہوتا جا رہا ہے اور صرف پنجاب میںسالانہ ہزاروںخواتین گھروں، کام کی جگہوں اور پبلک مقامات پر کسی نہ کسی طرح کے تشددکا شکار ہو رہی ہیں ، معاشرتی تعصبات کے باعث ہزاروں خواتین مسلسل غیرت کے نام پرقتل، اغوا، جنسی وگھریلو تشدد، تیزاب پھینکنے کے علاوہ ونی، سوارا، خریدو فروخت،کم عمری کی شادی، جنسی حراسیت،خود کشی، بدل صلح اور ذاتی مفادات کی بھینٹ چڑھ رہی ہیں۔