سی پیک کا مغربی روٹ آپریشنل کردیا گیا،کوئٹہ سے گوادر تک دودن کا فاصلہ اب آٹھ گھنٹے میں طے ہوتا ہے: احسن اقبال

31 جنوری 2018 (22:16)

سینٹ فنکشنل کمیٹی برائے حکومتی یقین دہانی کو آگاہ کیا گیا ہے کہ سی پیک کا مغربی روٹ آپریشنل کردیا گیا ہے اور کوئٹہ سے گوادر تک دودن کا فاصلہ اب آٹھ گھنٹے میں طے ہوتا ہے۔ پہلے مرحلے میں4 لین کی سڑک بنائی گئی ہے۔ تاہم اس کو 6لین تک توسیع دینے کی گنجائش موجود ہے۔کمیٹی کا اجلاس بدھ کوچیئرمین کمیٹی سینیٹرآغا شاہزیب درانی کی زیرصدارت پارلیمنٹ ہاؤس میں ہوا۔اسٹبلشمنٹ ڈویژن ، وزارت منصوبہ بندی و اصلاحات ، وزارت کیڈ وغیر ہ کی جانب سے دی گئی یقین دہانیوں پر متعلقہ حکام نے کارکردگی سے آگاہ کیا ۔ قائمہ کمیٹی نے وزارت کیڈ کی جانب سے پمز اور وفاقی ہسپتالوں کی توسیع کے حوالے سے یقین دہانی کو زیر بحث لاتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ ہسپتالوں میں مریضوں کی تعداد دن بدن بڑھ رہی ہے اور سہولیات ناکافی ہیں ۔ سینیٹر اورنگزیب خان نے کہا کہ نہ صرف اسلام آباد کی ہسپتالوں کی توسیع ہونی چاہیے بلکہ اسلام آباد کے مضافات میں قائم طبی مراکز کو بہتر بنایا جائے تاکہ علاج معالجے کی سہولیات عوام کو گھر سے قریب ترین طبی مراکز میں میسر ہوں۔ قائمہ کمیٹی کے چیئرمین نے بھی اس بات پر زور دیا کہ اس ضمن میں جامع پالیسی بنانے کی ضرورت ہے اور اس طرح سے سہولیات کو بہتر بناکر عوام کو معیاری خدمات فراہم کی جاسکتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ صحت اہم شعبہ ہے اور اس کی زیادہ سے زیاد ہ سرپرستی کرنے کی ضرورت ہے تاکہ عوام کو ریلیف فراہم ہوسکے۔ پمز کے حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ پمز کی او پی ڈیز میں روزمرہ کی بنیاد پر 8سے 10ہزار مریض علاج معالجے کیلئے آتے ہیں جبکہ ایمرجنسی میں روزانہ 24 سو سے 3ہزار مریضوں کو طبی معائنے کی سہولیات فراہم کی جاتی ہے ۔ قائمہ کمیٹی نے کہا کہ ہسپتالوں کی توسیع ضروری ہوگئی ہے ۔اس کے لیے سنجیدگی کے ساتھ کام کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ وزیر داخلہ احسن اقبال نے وزارت منصوبہ بندی کی جانب سے سی پیک کے مغربی روٹ کی دسمبر 2016میں تکمیل کے حوالے سے دی گئی یقین دہانی کے بارے میں بتایا کہ سی پیک کا مغربی روٹ نومبر 2016میں ترجیحی بنیادوں پر آپریشنل کردیا گیا ہے اور کوئٹہ سے گوادر تک کا فاصلہ جوکہ پہلے دودن میں طے ہوتا تھا اب آٹھ گھنٹے میں طے ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پہلے مرحلے میں4 لین کی سڑک بنائی گئی ہے۔ تاہم اس کو 6لین تک توسیع دینے کی گنجائش موجود ہے۔ انہوں نے سی پیک کے مغربی روٹ کی مجموعی صورتحال کے بارے تفصیلی آگاہ کیا۔ فنکشنل کمیٹی کے اجلاس میں اسٹبلشمنٹ ڈویژن کی جانب سے ملازمت کی کوٹہ کے حوالے سے آئینی ترمیم کے سلسلے میں متعلقہ وزارت نے تفصیلی طورپر آگاہ کیا۔سینیٹر آغاشاہزیب درانی نے کہا کہ ہمارا مقصدعوام کی فلاح و بہبود کیلئے کیے گئے اقدامات میں مزید تیزی لانا ہے اور اس ضمن میں فنکشنل کمیٹی اپنا کردار موثر انداز میں ادا کرتی رہے گی۔