گوجرانوالہ:تھانے میں تشدد کا شکار لڑکی اور پولیس اہلکاروں کے بیانات قلمبند

31 جنوری 2018

گوجرانوالہ (نمائندہ خصوصی) چوری کے الزام میں جواں سال لڑکی کو رات بھر تھانے میں رکھ کر تشدد کا نشانہ بنانے کے واقعہ کی انکوائری کیلئے وزیراعلی پنجاب کے حکم پر دو رکنی اعلی سطحی ٹیم کی طرف سے ملوث پولیس ملازمین اور متاثرہ لڑکی کے بیانات قلمبند کر لئے گئے۔ بتایا گیا ہے وزیراعلی پنجاب کی ہدایت پر ڈی آئی جی عبدالرب اور کمشنر گوجرانوالہ کیپٹن (ر) محمد آصف پر مشتمل دو رکنی ٹیم نے لڑکی پرتشدد کے الزام میں گرفتار اے ایس آئی اور لیڈی کانسٹیبل کے بیانات قلمبند کرنے کے بعد متاثرہ لڑکی انیسہ سے بھی ملاقات کی اور اس سے واقعہ کی تفصیلات معلوم کیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ انیسہ نے انکوائری ٹیم سے اپیل کی کہ جس طرح اس پر وحشیانہ تشدد کیاگیا دونوں ملزمان کو بھی اسی طرح تشدد کا نشانہ بنایا جائے۔ دوسری طرف پولیس نے چوری کے مقدمہ کے مدعی اکرم‘ اس کے کزن اسلم اور الیاس کو بھی حراست میں لے لیا۔ انکوائری کمیٹی ملزمان اور متاثرہ لڑکی کے بیانات کی روشنی میں اپنی رپورٹ وزیراعلی پنجاب کو پیش کرے گی جس کے بعد قصور وار اہلکاران کے خلاف سخت کارروائی کا امکان ہے۔