اے این پی نے کمسن بچیوں کے ساتھ درندگی کے واقعات کے خلاف تحریک التوا جمع کرادی

31 جنوری 2018

پشاور(بیورورپورٹ)عوامی نیشنل پارٹی خیبرپختونخوا نے صوبہ میں کمسن بچیوں کے ساتھ درندگی اور قتل کرنے کے واقعات کے خلاف صوبائی اسمبلی میں تحریک التوا جمع کرادی ہے۔ تحریک التوا ء پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے اسمبلی سیکرٹریٹ میں جمع کرائی جس میں کہا گیا ہے کہ صوبے کے طول وعرض میں آئے روز بچیوں کے ساتھ درندگی کے واقعات اور ان کی ہلاکت جیسے واقعات رونما ہو رہے ہیں، ان واقعات میں غیرت کے نام پر قتل اور طالبات کی بے دردی سے ہلاکت لمحہ فکریہ ہیں جبکہ تمام واقعات میں قاتلوں کا فرار ہو جانا اور گرفتار نہ ہونا اس سے بھی بڑھ کر افسوسناک ہے، تحریک التواء میں مزید کہا گیا ہے کہ صوبے میں فرانزک لیبارٹری کا نہ ہونا حکومتی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے اور حکومت کی یہ ذمہ داری بنتی ہے کہ لوگوں کی جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنائے،سردار حسین بابک نے کہا کہ صوبے میں ان دردناک اور افسوسناک واقعات کا روزانہ کی بنیاد پر پیش آنا خطرناک صورت اختیار کر گیا ہے جس سے حکومت کی غیر ذمہ داری اور بے حسی عیاں ہوتی ہے، انہوں نے کہا کہ پہلے ڈی آئی خان کا واقعہ، مردان اور نوشہرہ کے واقعات اور اب کوہاٹ میں طالبہ کا بے دردی سے قتل اور قاتل کا فرار کیا پولیس کی پیشہ ورانہ کارکردگی کا عکاس نہیں ہے،؟انہوں نے مطالبہ کیا کہ ملزمان کو فوری طور پر گرفتار کر کے قانون کے کٹہرے میں لایا جائے،حکومت اپنی ذمہ داری کا احساس کرے اور اپنی ناکامی کا اعتراف کرتے ہوئے اپنی خود تعریفی مہم بند کرے،اور مسئلے کی نوعیت کی سنگینی کا احساس کرے۔