حکمرانوں کو کاروبار سے روکنے کیلئے قانون سازی کرینگے:عمران

31 جنوری 2018

فیصل آباد (احمد جمال نظامی سے) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے اقتدار میں آ کر کوئی شخص کاروبار نہیں کر سکتا، اقتدار ملا تو اس کے لئے قانون سازی کریں گے کیونکہ جب کوئی شخص اقتدار میں ہو اور وہ اپنی ذات کو فائدہ پہنچانے کے لئے کاروبار کرے تو اصل کاروباری حضرات کو بہت زیادہ نقصان اٹھانا پڑتا ہے۔ میں نے صوبہ خیبر پی کے میں کوئی فیکٹری نہیں لگائی۔ کرپشن کے خاتمے کے بغیر سرمایہ کاروں کو اعتماد میں نہیں لیا جا سکتا لیکن شریفوں کی حکومت کرپشن کے نئے ریکارڈ قائم کر رہی ہے۔ تحریک انصاف کا ایجنڈا ملک سے غربت کا خاتمہ ہے۔ میں وعدہ کرتا ہوں تحریک انصاف اقتدار میں آئی تو ایسی پالیسیوں کا نفاذ کرے گی جو غریبوں کے حق میں ہو۔ تحریک انصاف اقتدار میں آئی تو صنعت کاروں اور صنعتی مزدوروں کے حقوق کے لئے اپنا کردار ادا کرے گی۔ نوازشریف، شہبازشریف ملک میں کرپشن کے نئے ریکارڈ قائم کرتے ہوئے اپنی ملوں کی تعداد بڑھا رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے فیصل آباد میں ٹیکسٹائل کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ٹیکسٹائل سیکٹر کی ترقی کیلئے جامع حکمت عملی تجویز کی گئی ۔ عمران خان نے کہا ایک سازش کے تحت ملک سے سرمایہ دبئی منتقل کیا گیا جس کے پیچھے چھپے لوگ آج بیرون ملک بیمار ہوئے بیٹھے ہیں۔ ایک سازش کے تحت ہی صنعتوں کے لئے پیداواری لاگت میں اضافہ کر دیا گیا جس کا مقصد بھارت کی صنعتوں کو بین الاقوامی سطح پر موقع فراہم کرنا تھا۔ ٹیکسٹائل صنعت ملک کی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کا درجہ رکھتی ہے لیکن بجلی، گیس، پٹرولیم مصنوعات کے بحرانوں اور ان کی قیمتوں میں بار بار اضافہ کر کے ٹیکسٹائل کی صنعت کو تباہی کے دہانے پر لاکھڑا کیا گیا ہے ۔ حکمران بجلی کی لوڈشیڈنگ کے خاتمے کے دعوے تو بہت کرتے ہیں لیکن موسم سرما کے آغاز کے ساتھ ہی گیس کی بدترین لوڈشیڈنگ جاری ہے۔ گرمیوں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ جاری رہے گی۔ نوازشریف صنعتوں کو تباہ کرنے اور عوام کو مہنگائی، بیروزگاری اور لاقانونیت میں دھکیلنے کے بعد ملک کے سب سے مقدس ادارے سپریم کورٹ پر تنقید کے بار بار تیر چلا رہے ہیں۔ نوازشریف صرف اور صرف عدلیہ پر اس لئے تنقید کر رہے ہیں کسی طرح ان کی نااہلی ختم کر دی جائے اور دوسری طرف نیب میں ان کے کیسز جن میں ان کو اگلے ماہ سزا متوقع ہے ان کو ختم کر دیا جائے۔ نوازشریف کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔ انہوں نے کہا معیشت کی تباہی کی سب سے بڑی وجہ وہ اسحاق ڈار ہے جو اس وقت اپنی کرپشن پکڑی جانے پر خوف سے بیرون ملک روپوش ہیں۔ شعبہ ٹیکسٹائل کا بحران اور اس شعبہ سے وابستہ ہزاروں مزدوروں کی بے روزگاری کی سب سے بڑی وجہ بھی اسحاق ڈار کی غیرمنصفانہ اور بدعنوانیوں پر مبنی پالیسیاں ہیں ۔ عمران خان نے کہا تحریک انصاف آئندہ انتخابات کے دوران مسلم لیگ(ن) اور شریف برادران کا بھرپور مقابلہ کرے گی اور تحریک انصاف ملک کی سب سے بڑی جماعت بن کر ابھرے گی۔ نوازشریف نے ماضی کی طرح عدلیہ کے خلاف کوئی سازش کرنے کی کوشش کی تو اس کا بھرپور مقابلہ کریں گے۔ انہوں نے الزام عائد کیا اسحاق ڈار نے ایک سازش کے تحت سرمایہ ملک سے باہر منتقل کرایا اور اب ایک سازش کے تحت ملک سے باہر بیٹھا ہے تحریک انصاف اسحاق ڈار کو ملک کی معیشت تباہ کرنے اور لوٹ مار کرنے کے بعد ایسے نہیں جانے دے گی۔ اسحاق ڈار کو اتنے زیادہ غیرملکی قرضے لینے، کرپشن کیسز اور سرمایہ دبئی منتقل کرنے کا عوام کو حساب دینا ہی ہو گا۔ بعد ازاں مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل تحریک انصاف میاں فرخ حبیب کی جانب سے منعقدہ یوتھ لیڈر شپ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ترقی اور کامیابیاں جہد مسلسل سے ہی حاصل کی جاسکتی ہیں جو افراد اپنی زندگی کو ایک نظریہ حیات کے مطابق گزارتے ہیں کامیابیاں ہمیشہ ان کے قدم چومتی ہیں۔
عمران خان


سرگودھا + اسلام آباد (نامہ نگار + نوائے وقت رپورٹ) چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے کہا ہے ملک پر مسلط کرپٹ مافیا نے قومی وسائل اور عوامی حقوق غصب کرکے وطن عزیز کو تاریخ کے بدترین بحرانوں سے دوچار کردیا، ہم اقتدار کی بجائے اقدار کے تحفظ کے لئے میدان عمل میں آئے ہیں، نااہل و کرپٹ عناصر سے قوم کی لوٹی ہوئی پائی پائی وصول کی جائے گی، کوٹمومن کے ضمنی الیکشن میں نوجوان تبدیلی کے حوالہ سے روایت شکن کردار اد ا کریں گے، انتخابی مہم میں سرکاری اہلکاروں کی مداخلت کسی بھی صورت قبول نہیں، الیکشن کمیشن ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزیوں کا نوٹس لے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے کوٹمومن آمد پر سابق ممبر قومی اسمبلی غیاث احمد میلہ کی رہائشگاہ پر پارٹی رہنمائوں کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کیا، اسلام آباد سے نوائے وقت رپورٹ کے مطابق چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے نواز شریف چوری چھپانے کیلئے سپریم کورٹ پر تنقید کر رہے ہیں۔ کسی جمہوری ملک میں عدلیہ پر تنقید نہیں کی جاتی۔ سپریم کورٹ صبر و تحمل کا مظاہرہ کر رہی ہے۔ خیبر پی کے پولیس کیخلاف مہم چلائی جا رہی ہے۔ خیبر پی کے پولیس پاکستان میں مثالی ہے۔ خیبر پی کے میں جرائم کی شرح کم ہوئی ہے۔ خیبر پی کے پولیس کے معاملات میں کوئی مداخلت نہیں کر سکتا۔ چیف جسٹس خیبر پی کے پولیس کی کارکردگی کا جائزہ لیں۔

عمران/ کوٹمومن

آگ

ہیلی کاپٹر

’’سپر بلیو بلڈ مون‘‘

لیویز اہلکار جاں بحق

فیصلہ