حکومت نے بجلی کی پیداوار کو 13 ہزار سے بڑھا کر 21 ہزار میگاواٹ کردیا: عابد شیر علی

31 جنوری 2018

لاہور + قصور (نیوز رپورٹر + نمائندہ نوائے وقت) لاہور الیکٹرک سپلائی کمپنی (لیسکو) کے قصور سرکل میں منعقدہ کھلی کچہری سے خطاب کرتے وزیر مملکت برائے توانائی عابد شیر علی کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت نے بجلی کی پیداوار کو 13000میگاواٹ سے بڑھا کر 21000میگاواٹ تک پہنچا دیا۔ ہمیں امید ہے کہ آنے والے موسم گرما تک مزید 5000میگا واٹ بجلی سسٹم میں داخل کردی جائے گی رواں سال اپریل تک نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ مکمل کرلیا جائے گا۔ واپڈا کمپلیکس قصور میں منعقدہ کھلی کچہری میں عوام سے خطاب کرتے عابد شیر علی کا کہنا تھا کہ میں اور میری لیسکو کی ٹیم چیف ایگزیکٹو سید واجد علی کاظمی کی سربراہی میں آ پ کی عدالت میں آئے ہیں ہفتہ اور اتوار کی چھٹی کے دوران بھی کام کیا جائے گا تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جاسکے کہ کسی سائل کا مسئلہ باقی نہ رہے۔ اس موقع پر اووربلنگ کی شکایت پر نورپور سب ڈویژن کے میٹر ریڈرکے کیسرگڑھ کے میٹر انسپکٹر کو فوری طور معطل کردیا گیا۔ مزید شکایات پر ایس ڈی او رورل ایریا امجد حسین بھٹو کو بھی معطل کر دیا۔ دوران کھلی کچہری چار ہزار سے زائد درخواست پیش کی گئیں ایکسیئن اور ایس ڈی او ملتان کیخلاف شکایات ملنے پر ایس ای لیسکو کو انکوائری افسر مقرر کر دیا۔ وفاقی مملکت برائے توانائی عابد شیر علی نے وصول کردہ شکایات کے حل کے چیف انجینئر محمد علی ڈوگر کی سربراہی میں ایک پانچ رکنی کمیٹی بنا دی جس میں مجاہد سعید رانا چیف انجنئیر/سی ایس ڈی، خالد مرزا کسٹمر سروسز، شمشیر اعظم ڈائریکٹر کمرشل پیپکو اور جعفر حسین پی ڈی کنسٹرکشن شامل ہیں ایس ای قصور اور ایکسئینز انہیں معاونت فراہم کریں گے ۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ اگلے ہفتے دوبارہ قصور سرکل کا دورہ کریں گے یہ خصوصی کمیٹی اگلے منگل سے قبل وصول شدہ تمام شکایات کا مثبت حل تلاش کرکے سائلین کے مسائل فی الفور حل کرئے گی۔اس موقع پر چیف ایگزیکٹو لیسکو سید واجد علی کاظمی نے ایس ای اور ایکسئینزسمیت تمام ایس ڈی اوز کو ہدایات جاری کیں کہ وہ اپنے علاقوں میں کھلی کچہریوں کا انعقاد کریں عوام کے بجلی سے متعلق مسائل کو بنا کسی تاخیر کے حل کیا جائے۔