کرم ایجنسی: بارودی سرنگ دھماکے میں گاڑی تباہ، 3 خواتین سمیت ایک ہی خاندان کے 8 افراد جاں بحق

31 جنوری 2018

کرم ایجنسی (نامہ نگار) اپر کرم پاڑہ چنار کے علاقے میں بارودی سرنگ کے دھماکے میں ایک ہی خاندان کے 8 افراد جاں بحق اور ایک زخمی ہوگیا،جبکہ گاڑی مکمل طور پر تباہ ہوگئی ،زخمی کو فوری طور پر ہسپتال منتقل کردیا گیا، جاں بحق ہونے والوں میں پانچ خواتین اور تین مرد شامل ہیں، دھماکے بعد سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لیکر سرچ آپریشن شروع کردیا ۔تفصیلات کے مطابق ایجنسی ہیڈکواٹر پاڑہ چنار سرحدی علاقے باسوپل کانڈے عباس زیارت کے قریب بارودی سرنگ دھماکے کے نتیجے میں ایک ہی خاندان کے 8افراد جاں بحق ہوئے پولیٹیکل انتظامیہ کرم کے مطابق مذکورہ خاندان اپنے رشتہ دار کے گھر جارہے تھے کہ راستے میں نامعلوم دہشت گردوں کی جانب سے نصب کئے گئے بارودی سرنگ سے انکی گاڑی ٹکراگئی جس کے نتیجے میں زوردار دھماکہ ہوا گاڑی میں سوار تمام افراد موقع پر جاں بحق ہوئے اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ اپر کرم اکبر افتخار کے مطابق سرحدی علاقے غوزگھڑی مقبل سے تعلق رکھنے والے بادشاہ خان نامے شخص اپنے خاندان والوں کے ساتھ رشتہ داروں کے گھرتعزیت کے لئے بوشہرہ جارہے تھے جیسے ہی انکی گاڑی باسوپل کانڈے عباس کے قریب پہنچی تو برساتی نالے میں نامعلوم دہشت گردوں کی جانب سے رات کی تاریکی میں بچھائی گئی بارودی سرنگ سے انکی گاڑی ٹکرائی جس کے نتیجے میں موقع پر امین شاہ ولد بادشاہ خان قوم مقبل بادشاہ خان ولد سپین بادشاہ ،اویس خان ولد امین شاہ ، بی بی رحیمہ،تاج برو زوجہ سیدا جان ،بی بی سہرا زوجہ روز خان ،لونگ بی بی زوجہ میوا خان موقع پر جاں بحق اور خائستہ جان ولد علی باز شدید زخمی ہوئے جن کو ابتدائی طبی امداد کے بعد پشاور منتقل کردیا گیا ۔زخمی شخص کی دو بیویاں بھی جاں بحق ہونے والوں مین شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دھماکے کی شدت اتنی رور دار تھی کہ گاڑی دھماکے کی جگہ سے کئی گز دور جاگری ،مقامی زرائع اور عینی شاہد رحمان مقبل ٹیکسی ڈرائیور کے مطابق مذکورہ خاندان صبح آٹھ بجکر تیس منٹ انکی گاڑی کو کراس کرکے تیزی سے آگے نکل گئی، غوزگھڑی مقبل کی حدود کو کراس کرتے ہوئے جیسے کانڈے عباس باسوپل برساتی نالے پہنچی تو زوردار دھماکہ ہوا،گاڑی میں سوار افراد کے جسم کے اعضاء دور دور بکھر گئے دھماکے کے بعد قریبی سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر لاشوں اور زخمی کو ہیڈکواٹر ہسپتال پاڑہ چنار منتقل کردیا ،ادھر دھماکے میں جاں بحق افراد کی پشاور میںموجود بہن واقعہ کی اطلاع ملنے پردل کا دورہ پڑنے سے انتقال کر گئیں ، جن کی میت کرم ایجنسی پہنچا دی گئی۔ موجود اہل علاقہ نے دالساء چیک پوسٹ کے قریب مین روڈ پر لاشیں رکھ کر دھرنا دیا اور مطالبہ کیا ہے کہ حدودی ذمہ داری کے تحت ملحقہ علاقوں میں آپریشن کیا جائے تاکہ ملوث افراد کو سخت سزا دی جائے کیونکہ اس پہلے بھی اسی علاقے میں قوم غوزگھڑی مقبل کو نشانہ بنا یا جا چکا ہے اور مظاہرین نے یہ بھی مطالبہ کیا ہے کہ آرمی چیف کے آنے تک دھرنا جاری رہے گا ۔تاہم بعد ازاں مقبل قبیلہ مطالبات منظور ہونے پر احتجاج ختم کرکے جاں بحق افراد کی نماز جنازہ ادا کر دی گئی ،آٹھ جنازے ایک ساتھ اٹھنے پر ہر آنکھ اشکبار تھی،نماز جنازہ میں لوگوں کی بہت بڑی تعداد نے شرکت کی۔علاقے کی فضاء سوگوار رہی، سکیورٹی فورسز نے علاقے میں سراغ رسا ںکتوں کی مدد سے سرچ آپریشن شروع کیا ہے آخری اطلاع آنے تک سکیورٹی فورسز نے دو افراد کو گرفتار کرکے تفتیش کے لئے نامعلوم مقام کو منتقل کردیا گیا ہے اور مزید کاروائی جاری ہے۔

کرم ایجنسی دھماکہ