سروس سٹرکچر پر عملدرآمد نہ ہونے کےخلاف ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کا احتجاجی مظاہرہ

31 دسمبر 2013

ملتان (وقائع نگار خصوصی) ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن ملتان نے گزشتہ روز سروس سٹرکچر پر عملدرآمد نہ ہونے اور پنجاب بھر کے سرکاری ہسپتالوں میں مفت ادویات کی عدم فراہمی پر نشتر ہسپتال ملتان میں احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرہ کی قیادت ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن ملتان کے صدر ڈاکٹر مظہر چودھری‘ ڈاکٹر جہانگیر ریاضی‘ ڈاکٹر علی وقاص اور ڈاکٹر کاشف وغیرہ نے کی۔ مظاہرین نے حکومت پنجاب کی ناقص پالیسیوں کے خلاف شدید نعرے بازی کی اور کہاکہ ایک سال گزرنے کے باوجود حکومت پنجاب نے ینگ ڈاکٹرز کے منظور شدہ ہیلتھ سروس سٹرکچر پر عملدرآمد نہیں کروایا ہے جس سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ حکومت پنجاب صحت کے ایشوز کو حل کرنے میں کتنی سنجیدہ ہے۔ مظاہرین نے حکومت پنجاب سے مطالبہ کیا کہ حکومت فوری طور پر سروس سٹرکچر پر عملدرآمد کروائے۔ مریض کو مفت اور معیاری ادویات لیبارٹری کی سہولیات فراہم کی جائیں۔ ہسپتالوں کی خراب مشینری کو فوری مرمت کروایا جائے۔ پبلک سروس کمیشن کے ذریعے سلیکٹ ہونے والے پوسٹ گریجویٹ ٹرینی میڈیکل آفیسرز کو ٹریننگ کے مواقع دئیے جائیں اگر حکومت نے ینگ ڈاکٹرز کے مطالبات کو تسلیم نہیں کیا تو ینگ ڈاکٹرز احتجاج کا سلسلہ مرحلہ وار جاری رکھیں گے اور 9 جنوری کی جنرل کونسل میٹنگ میں ینگ ڈاکٹرز آئندہ کے لائحہ عمل کااعلان کریں گے۔
ینگ ڈاکٹرز