اسلامی ملک میں رقص و سرود کی محفلوں کی اجازت نہیں ہونی چاہیے: جے یو آئی

31 دسمبر 2013

لاہور ( سپیشل رپورٹر)     مسلمان ہونے کے ناطے سے نئے سال کے آغاز پر اللہ کے حضور نوافل اد ا کرکے آنے والے سال میں ملک میں امن امان کے قیام اور ہر مشکل کے لئے دعائیںکرنی چاہیں حکومت نئے سال کے موقع پر رقص و سرور اور بے حیائی کی مجالس کو روکے بحیثیت مسلمان نئے سال کا آغاز یکم محرم سے ہوتا ہے یہ باتیں جے یو ائی کے راہنماوں مولانا محمد امجد ، مولانا جمیل الرحمن درخواستی نے اپنے بیان میں کہی ۔ انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ نئے سال کے آغاز پر ہونے والی رقص و سرود کی ممکنہ تقریبات کو روکنے کےلئے عملی اقدامات کئے جائیں۔ انہوں نے کہاکہ اسلام کے نام پر بننے والے ملک میں عوام ایسے کسی پروگرام کی اجازت نہیں دیں گے۔