محکمہ تعلیم کے غیر قانونی احکامات نوٹس کون لے گا…؟

31 دسمبر 2013

 مکرمی! عرصہ دراز سے محکمہ تعلیم پنجاب کو فرضی انفارمیشن کے وینٹی لیٹر سے آکسیجن مہیا کی جارہی ہے مقاصد سے مکمل چشم پوشی اختیار کی جاچکی ہے محکمہ تعلیم پنجاب میں ہر ماہ ہر ڈسٹرکٹ کی رینکنگ کی جاتی ہے محض اپنا گراف بہتر بنانے کیلئے ای۔ڈی۔اوز پنجاب نے زبانی احکامات کے ذریعے اساتذہ کی اتفاقیہ لیو کو ختم کردیا ہے یہ بات سروس رولز1974 اور لیو رولز 1981 کی کھلی خلاف ورزی ہے پنجاب بھر کے لاکھوں اساتذہ ذہنی دبائو کا شکار ہیںخواتین اساتذہ اپنے بیمار بچوں کو ساتھ سکول لانے پر مجبور ہیں اساتذہ اپنے بوڑھے والدین کی تیمارداری کرنے سے بھی عاجز آچکے ہیں کیا اساتذہ کے بنیادی حقوق سلب کرکے اُن سے بہتر نتائج کی توقع کی جاسکتی ہے…؟ ہر ضلع کے ای ڈی او تعلیم کی طرف سے ہیڈ ماسٹرز صاحبان کو حکم دیا گیا ہے کہ جو بھی ہو اساتذہ اور طالب علموں کی حاضری90% سے کم ارسال نہ کی جائے چاہے جھوٹ کا سہارا لیاجائے مثال کے طور پر محرم کی چھٹیوں کے اگلے دن ہفتہ کا دن تھا اس دن پنجاب کے ہر تعلیمی ادارے میں طالبعلمو ں کی حاضری90% کیسے ہوسکتی ہے …؟ کیا اس دن 90% حاضری ارسال کرنا صدی کا سب سے بڑا مذاق نہیں ہے …؟(سید شفیق الرحمن صدر ایلیمنٹری ٹیچرز ایسوسی ایشن ،شیخوپورہ)