پاکستان اور ترکی کو مشترکہ دشمن کا سامنا ہے: خواجہ آصف

30 اکتوبر 2015

اسلام آباد (اے پی پی) وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ پاکستان اور ترکی دہشت گردی جیسے مشترکہ دشمن کا سامنا کر رہے ہیں اور کہا کہ علاقائی اور عالمی امن کو درپیش دہشت گردی جیسے خطرے پر کامیابی سے قابو پا لیا جائے گا، پاکستان اور ترکی کے تعلقات تاریخی ہیں اور ہمارا عظیم ثقافتی ورثہ بھی مشترک ہے۔ جمعرات کو ترکی کے 92 ویں قومی دن کے حوالے سے منعقدہ ایک تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے وزیر دفاع نے کہا کہ میرے نزدیک پاکستان اور ترکی کے تعلقات کی اہمیت طویل عرصے کے تعلقات کی ہے۔ پاکستان اور ترکی کے لوگوں کے گہرے تعلقات تاریخ میں رقم ہیں۔ وزیر دفاع نے گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ، گورنر بلوچستان محمد خان اچکزئی، اسلام آباد میں ترکی کے سفیر صادق بہادر جیرگن کے ہمراہ قومی دن کا کیک کاٹا۔ اس سے پہلے ترکی کے سفیر صادق بابر گرگن نے اپنے اردو اور ترک خطاب میں کہا کہ ترکی کے عوام پاکستان کے دکھ درد کو محسوس کرتے ہیں جو انہیں حالیہ زلزلہ کی باعث پیش آیا جس میں قیمتی انسانی جانیں اور املاک ضائع ہوگئیں۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کی ثقافت، تاریخ اور بھائی چارہ مثالی ہے۔ اس موقع پر ترک سفیر نے ترکی کے صدر رجب طیب اردوان کا پیغام پڑھ کر سنایا اور کہا کہ ترکی کے عوام پہلے کی طرح مسائل پر قابو پا لیں گے۔ تقریب میں اراکین پارلیمنٹ، سفارتکاروں، صحافیوں سمیت مہمانوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔