وزیراعظم قانون شکن رانا ثنا کو وزارت سے ہٹائیں: چودھری شیرعلی

30 اکتوبر 2015

فیصل آباد (نمائندہ خصوصی) چودھری شیرعلی نے وزیراعظم اور وزیراعلی پنجاب سے مطالبہ کیا ہے پنجاب کے سب سے قانون شکن وزیر قانون رانا ثنا کو بھولا گجر قتل کیس سمیت 20 افراد کے قتل میں ملوث ہونے پر وزارت سے ڈس مس کیا جائے۔ رانا ثنا بار بار پوچھتے ہیں کہ ایک بندے کا نام بتائو۔ ثناء اللہ نے شوکت جٹ اور اس کے سالے کو قتل کرایا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے فیصل آباد اقبال پارک دھوبی گھاٹ میں ورکر کنونشن سے رات گئے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے وزیراعلی پنجاب میاں شہباز شریف سے مطالبہ کیا کہ ٹارگٹ کلر انسپکٹر فرخ وحید کو لندن سے گرفتار کرکے لایا جائے میرے پاس ویڈیو فلم موجود ہے کہ جس روز رانا ثنا بھولا گجر کی نماز جنازہ پڑھ کر جا رہے تھے اس وقت انسپکٹر فرخ وحید ان کی گاڑی چلا رہا تھا شیرعلی نے کہا کہ میں اس قانون شکن وزیر قانون کو پھانسی گھاٹ تک لے کر جائوں گا۔ رانا ثنا ملک نواز ایم پی اے کے بھائی کو فیصل آباد کا میئر بنوانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا ارکان اسمبلی نے 75 فیصد مسلم لیگیوں کو فیصل آباد میں بلدیاتی ٹکٹ دیتے ہوئے نظرانداز کیا۔ پیسے لیکر ٹکٹیں فروخت کی گئیں۔ ثناء اللہ نے 50 لاکھ لے کر الیاس انصاری کو پنجاب اسمبلی کا ٹکٹ دلوایا۔ میئر گروپ نہ لاتے تو 75 فیصد کارکن تحریک انصاف میں چلے جاتے۔ شیر گروپ لا کر مسلم لیگ (ن) پر احسان کیا۔ انہوں نے کہا رانا ثناء اللہ مجھے پاگل قرار دیتے نہیں تھکتے‘ ڈاکٹر سے رانا ثناء اللہ کا ہم 20 قتلوں میں علاج کریں گے۔ چودھری شیر نے کہا نوازشریف اور شہبازشریف میرے قائد ہیں مگر رانا ثنا کو جواب دینا ضروری تھا۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کو لاہور میں سمجھانے والا کوئی نہیں عمران سن لیں فیصل آباد ممی ڈیڈی لوگوں کا شہر نہیں انہوں نے کہا رانا ثنا قانون شکن ہیں۔ جلسہ رات انتخابی مہم ختم ہونے کے بعد تک جاری رہا۔