ملک میں معیشت کی بہتری کرنے والوں نے ملک کو مقروض بنادیا ہے: خورشید احمد شاہ

30 مارچ 2018 (23:30)

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ نے کہا ہے کہ ملک میں معیشت کی بہتری کرنے والوں نے ملک کو اتنا مقروض بنادیا ہے کہ ملک میں پیدا ہونے والے ہر بچے کے کان میں اذان کے ساتھ اس کے ایک لاکھ پچیس ہزار روپے کا مقروض ہونے کی نوید سنائی جانے لگی ہے. سکھر کے علاقے واری تڑ میں منعقدہ عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے خورشید شاہ کا مزید کہنا تھا کہ اب لوگ جاگ جائیں اور اٹھ کھڑے ہوں اور انتخابات میں اپنی بہتری اور ترقی کے لیے فیصلے کریں کیونکہ کچھ لوگ اب بھی یہی سمجھتے ہیں کہ وہ اس میڈیااورانٹرنیٹ کی موجودگی میں عوام کو بہت اچھی طرح بیوقوف بناسکتے ہیں, ہم ملک کو ایسی ریاست اور مملکت بنانا چاہتے ہیں جہاں انصاف و امن ہو لوگوں کو روزگار ملے ,ہم نے اپنے پانچ سالوں میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں ایک سو پچیس فیصد اضافہ کیا اور پنشروں کی پینشن میں سو فیصد اضافہ کیا لیکن یہ حکومت پانچ سالوں میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں چالیس فیصد تک اضافہ نہیں کرسکی ہے لیکن معیشت کی بہتری کے دعوے کرتے نہیں تھک رہی ہے, ہم ملک میں نظام کو چلتا ہوا دیکھنا چاہتے ہیں ہمیں لوگوں کے مسائل بڑھنے سے تکلیف ہوتی ہے لیکن آج ہمارے سیاستدان اور حکمران اپنے جھگڑوں سے فرصت نہیں ہےکہ وہ عوام کے مسائل کی طرف توجہ دیں, ہماری مڈل کلاس اب غریب طبقے میں تبدیل ہورہی ہے. ان کا کہنا تھا کہ ہمارے ملک کا نوجوان بدقسمتی سے اس ملک کےنوجوان ایک ایسی سیاسی جماعت کے سلوگن میں پھنس کررہ گئے ہیں تو ان کے لیے بس دعا کے سوا میرے پاس کچھ نہیں ہے, سیاست خدمت کے لیےکی جاتی ہے لیکن اس سیاست نے ہمیں بیمار بنا دیا ہے, پیپلزپارٹی سچ کے لیے جیو اور سچ کی خاطر جان قربان کردو کی سیاست سکھاتی ہے ,ہم نوجوانوں کے چہرے پر خوشی دیکھنا چاہتے ہیں نہیں چاہتے ہیں کہ وہ اپنی ڈگریاں لیے روزگار کے لیے ہماری پیچھے پیچھے بھاگیں.