کیمیائی حملہ‘ مہلک مواد رو سی جاسوس کے گھر کے باہر رکھا گیا تھا: برطانوی پولیس

30 مارچ 2018

لندن (صباح نیوز) برطانوی انسداد دہشت گردی پولیس نے بتایا ہے کہ روس نے جاسوس سرگئی اسکریپال اوراس کی بیٹی کو نشانہ بنانے کیلئے کیمائی مواد ان کے گھرکے باہر دروازے پر رکھاتھا جس کے اثرمیں اکروہ دونوں زخمی ہوگئے تھے۔ دوسری عالمی جنگ کے بعد یورپ کی سرزمین پر یہ پہلا کیمائی حملہ ہے۔برطانیہ نے جاسوس پر قاتلانہ حملے کا الزام روسی صدر ولادیمر پوٹن پر عائد کیاہے۔ جبکہ روس نے اس حملے کسی بھی قسم کی شمولیت سے انکار کیا ہے۔ اب تک مغربی ممالک نے اپنی سرزمین سے 130روسی سفارتکاروں کو بے دخل کر دیا ہے۔ روس نے جاسوس پر حملے کا الزام برطانیہ پر عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس نے روس کے خلاف محاذ کھڑا کرنے کیلئے یہ سب کچھ کیاہے۔ برطانیہ کی انسداد دہشت گردی پولیس کے اہم آفسر نے بتایا ہمارا انداز یہ ہے کہ اسکریپال کا کیمائی مواد سے واسطہ اس کے مین دروازے سے ہوا۔ ماہرین نے اب تک کیمائی مواد کی سب سے زیادہ مقدار ڈبل ایجنٹ کے دروازے پر دیکھی ہے۔ اور اسی سے اندازہ ہوتاہے کہ ان کاسامنا کیمیکل سے یہی ہوا۔مارچ کے پہلے ہفتے میں سیلسبری میں کیمائی حملے کے بعد سے اسکریپال اوراس کی 33سالہ بیٹی کی زندگی ہسپتال میں تشویشناک ہے۔