نئی مانیٹری پالیسی کا اعلان آج شرح سود میں 0.50 فیصد تک اضافہ کا امکان

30 مارچ 2018

اسلام آباد(آن لائن)ماہرین معیشت نے امریکی ڈالر کے مقابلے میں پاکستان روپے کی کمی کو مہنگائی کا ایک طوفان قرار دیا ہے ۔ موجودہ حالات کو مد نظر رکھتے ہوئے شرح سود میں اعشاریہ 25 فیصد سے اعشاریہ 50 فیصد تک اضافہ بھی ہوسکتا ہے ،جبکہ آئندہ دو ماہ کے لئے مانیٹری پالیسی کا اعلان آ ج جمعہ کو کیا جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق مین ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں واضح کمی سے ملک میں ایک بڑے مہنگائی کے طوفان کا خدشہ بڑھ گیا ہے جس سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کیا جائیگا جبکہ مئی جون میں بجلی بھی مزید مہنگی کی جائیگی۔ ماہرین کا کہنا ہے ایمنسٹی سکیم سے حکومت کو کوئی خاطر خواہ فائدہ نہیں ہوگا۔ عوام کو آئندہ چند ماہ میں ہی مہنگائی کیلئے تیار رہنا ہوگا۔ ملک میں گرتی ہوئی ایکسپورٹ اور زراعت میں کسانوں نقسانات کا اثر بھی ملکی معیشت پر منفی ہوگا جس سے مہنگائی کا ایسا طوفان آئیگا کہ عا م عوام کی قوت خرید مزید کم ہو جائیگی ۔ آئندہ دو ماہ کے لئے نئی زرعی پالیسی کا اعلان پریس ریلیز کے ذریعے آج کیا جائے گا۔مرکزی بینک نے گزشتہ مانیٹری پالیسی میں شرح سود میں 20 ماہ کے بعد اعشاریہ 25 فیصد کااضافہ کیا تھا اور اس وقت شرح سود 6 فیصد پر برقرار ہے۔
مانیٹری پالیسی