فوری ریفرنڈم کروانے، ملازمین کو 25فیصد ٹیکنیکل الاﺅنس اور نئے سروس سٹرکچرر سمیت دیگر مطالبات کیلئے مشترکہ طور پر ملک گیر تحریک چلانے کا اعلان

30 مارچ 2018

لاہور( اپنے نامہ نگار سے )پاکستان ملی لیبر فیڈریشن کے آل پاکستان لیبر کنونشن میں شریک ریلوے لیبر یونین اور ریل مزدور اتحاد سمیت 10سے زائد مزدور تنظیموں نے ملی لیبر فیڈریشن کی قیادت میں ریلوے میں فوری ریفرنڈم کروانے، ملازمین کو 25فیصد ٹیکنیکل الاﺅنس اور نئے سروس سٹرکچرر سمیت دیگر مطالبات کیلئے مشترکہ طور پر ملک گیر تحریک چلانے کا اعلان کیا اورکہا پاکستان ریلوے وہ واحد ادارہ ہے جو پورے پاکستان میں غریب عوام کی ٹرانسپورٹ کاسستا ذریعہ ہے تاہم اس ادارے کے ملازمین کو ان کے جائز حقوق سے محروم رکھا جارہا ہے۔ملک بھر کی تمام لیبر یونینز اپنے حقوق کیلئے ہر ممکن جدوجہد کریں۔ لیبر کنونشن کے دوران ریلوے مزدور اتحاد اور پاکستان ریلوے لیبر یونین نے پاکستان ملی لیبر فیڈریشن سے الحاق کا اعلان بھی کیا۔ریلوے لیبر یونین کے زیر اہتمام ریلوے لوکو شیڈ میں ہونے والے کنونشن سے ملی مسلم لیگ پاکستان کے صدر سیف اللہ خالد، پاکستان ملی لیبر فیڈریشن کے صدر سراج الدین ثاقب، جنرل سیکرٹری ملی لیبر فیڈریشن احسان احمد چوہدری، قائد مزدور ریلوے لیبر یونین سرفراز خاں، لال جان بلوچ، نذیر احمد اعوان، عبدالرحمن ودیگر نے خطاب کیا جبکہ اریگیشن پاور یونین کے جنرل سیکرٹری عتیق خاں، چیئرمین این ٹی ڈی سی پیغام یونین یحییٰ گجر، صدر باٹا یونین نزاکت علی،چیئرمین گیپکو پیغام یونین جاوید ڈار، یوٹیلیٹی سٹور سی بی اے یونین کے سعید خان، واسا یونین کے سلطان گجر، جنرل سیکرٹری ملی رکشہ یونین محمد نعیم، ایپکا یونین کے مختار گجر، پی ڈبلیو ڈی کے محبوب عالم، منظور احمد، محمد رمضان سمیت دیگر شریک ہوئے۔کنونشن میں کراچی، کوئٹہ، پشاور، سکھر، راولپنڈی، ملتان، لاہور ڈویژن اورملک بھر کے دیگر شہروں سے ریلوے کے ہزاروں محنت کش ٹرینوں کی بوگیاں بک کرواکے لاہور پہنچے اور کنونشن میں شریک ہوئے۔ ملی مسلم لیگ پاکستان کے صدر سیف اللہ خالد نے اپنے خطاب میں کہا سعد رفیق نے ملازمین کے سکیلوں کی اپ گریڈیشن کا جو وعدہ کیا تھا اسے پورا کیا جائے۔ٹیکنیکل الاﺅنس 11سے 15فیصد کی بجائے 25 فیصد کیا جائے ، سکیل 11تا 16 نظر انداز ہونے والے ملازمین کو بھی 25فیصد ٹیکنیکل الاﺅنس دیا جائے۔ پاکستان ملی لیبر فیڈریشن کے مرکزی صدر سراج الدین ثاقب نے کہا ریلوے محنت کشوں کیلئے سرفراز خان کی قیادت میں ریلوے ملازمین نے تاریخی کردار ادا کیا۔ ریلوے میں فوری ریفرنڈم کروایا جائے تاکہ مزدور اپنی مرضی سے سی بی اے منتخب کریں۔ انہوںنے پچھلے پانچ برسوں میں پاکستان پر 90 ارب ڈالر قرضے ہوجانے پرشدید تشویش کا اظہار کیااور کہا کہ یہ حکمرانوں کی لوٹ مارکا نتیجہ ہے۔ مزدو ریلوے لیبر یونین کے بانی صدر سرفراز خان نے کہا ریلوے مزدور کیساتھ انتظامیہ نے ظلم کی انتہا کر دی ہے ۔ مزدور سے 24گھنٹے ڈیوٹی بھی لی جاتی ہے اور ان پر پریشر بھی ڈالا جاتا ہے ۔ پاکستان ملی لیبر فیڈریشن کے جنرل سیکرٹری احسان احمد چوہدری نے کہاکنٹریکٹ اور ٹی ایل اے ملازمین کو کنفرم کر کے تاریخ بھرتی سے بقایا جات دیا جائے ۔ ریلوے لیبر یونین کے رہنما لال جان بلوچ، نذیر احمد اعوان، عبدالرحمن ودیگر نے کہاہمارے مطالبات جلدپورے کئے جائیں ۔
ریلوے ریفرنڈم