پیر سیدجعفر علی شاہ قادری

30 مارچ 2018

ملک مظہر حسین اعوان نقشبندی


قدوۃ العارفین زبدۃ السالکین حضرت پیر سید جعفر علی شاہ ولی قادری کا سالانہ عرس مبارک غوثیہ آستانہ کوٹلی پلاٹ شریف نارووال میں نہایت تزک و احتشام کے ساتھ منایا گیا۔بابا پیر سید جعفر علی شاہ ولی گیلانی قادری نے ہمیشہ خالق کائنات کی رضا و خوشنودی کی خاطر مجاہدے کئے،بھوک پیاس کو برداشت کیا اور صبر وتحمل کے دامن کو کبھی بھی نہیں چھوڑا۔ اس خطہ پاک و ہند میں داتا علی ہجویری ،بہاوالدین ذکریا ملتانی ،خواجہ معین الدین چشتی اجمیری ،مجدد الف ثانی ،پیر مہر علی شاہ گولڑوی ،پیر خواجہ محمد قاسم موہڑوی سرکار ،حضرت خواجہ زندہ پیر گھمکول شریف ،پیر سید جماعت علی شاہ صاحب اور سید جعفر علی شاہ الگیلانی القادری اور دیگر تمام اولیاء اکرام نے ہی فروغ اسلام کیا ہے ۔ پیر سید جعفر علی شاہ ولی قادریؒحضور غوث الاعظمؒ کی اولاد میں سے ہیں، کم عمر ی میں ہی تمام مسائل شریعت و طریقت اور علوم منطق و فلسفہ کی روشنی سے آپکی چشم باطن منور تھی ،ان کا دو روزہ عُرس مبارک بڑے تزک و احتشام سے منایا جاتا ہے جو کہ گزشتہ دنوں دربار غوثیہ کوٹلی پلاٹ شریف میں نہایت عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا ۔ تمام ترتقریبات کی صدارت سجادہ نشین پیر سید سیف اللہ خالد گیلانی القادری مرکزی چیئرمین پاکستان مشائخ وعلماء کونسل نے فرمائی ۔آستانہ عالیہ چورہ شریف اٹک کے سجادہ نشین پیر سید سعادت علی شاہ گیلانی نے عرس کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا بزرگان دین نے ہر دور میں تکالیف و مصائب کو برداشت کرکے دین اسلام کے پرچم کو سربلند رکھا،ممتاز مذہبی سکالر علامہ پیرزادہ محمد اکرم رضا بغدادی نے کہا کہ ہماری پریشانیوں اور مسائل کی اصل وجہ قرآن و سنت ؐ سے روگردانی ہے سجادہ نشین و مرکزی چیئرمین پاکستان مشائخ وعلماء کونسل پیر سید سیف اللہ خالد گیلانی نے اپنے صدارتی خطبہ میں کہا کہ پاکستان اولیاء اللہ کا فیضان ہے جس کے حصول کی خاطر ہمارے آباواجداد نے بے پناہ قربانیاں دیں۔اس موقع پرمرکزی وائس چیئرمین پیر ضمیر اختر رانا،مرکزی سیکرٹری جنرل ایس اے حکیم القادری ،سجادہ نشین کوٹ مٹھن شریف پیر خواجہ معین الدین محبوب کوریجہ ،سجادہ نشین حضرت میراں حسین شاہ زنجانی پیر سید افضال حسین زنجانی،سجادہ نشین دربار کاظمیہ چنوں موم پیر سید فدا حسین شاہ قادری ،سجادہ نشین ڈونگیاں شریف پیر سید احمد رضا شاہ بخاری ،پیر آف علی پورسیداں شریف پیر سید منظر حسین شاہ جماعتی ،سجادہ نشین واصفی آستانہ بڈیانہ پیر ظہور واصف بڈیانوی ،سجادہ نشین گڈگور شریف پیر سید امجد علی شاہ گیلانی ،پیر سید طلحہ شاہ بخاری ،پیر خواجہ معصوم انور مجددی ،سید عاصم شاہ گیلانی ،ملک مظہر حسین اعوان ،حاجی آصف نذیر ہاشمی،عبدالغفار سلطانی ،سید عاطف گیلانی سمیت دیگر علماء کرام و مشائخ عظام بھی موجود تھی ۔تقریب سے پیرمحمدوقاص منور مجددی ، حافظ محمد ریحان نقشبندی ،علامہ اللہ دتہ سجن سائیں ،محمد انس خان جماعتی ، ،طاہر مانگوی ،علی حسن قادری ،ناصر حسین فاروقی ،حافظ زاہد قادری ،محمد عثمان قادری ودیگر نے بھی خطاب و ہدیہ نعت پیش کیا۔