ای لرننگ پروگرام کا مقصد تعلیمی استعدادکار بڑھانااور طلبہ تک تعلیم کی بہتر فراہمی ہے،عبدالرحمن خان کانجو

30 مارچ 2018

راولپنڈ ی (اپنے سٹا ف ر پو ر ٹر سے )اوپی ایف نے تعلیمی شعبے میں ایک اور سنگ میل عبورکرکے دورجدید کے تقاضوں کے مطابق ٹیکنالوجی کے استعمال کو بروئے کار لاتے ہوئے تاریخ رقم کر دی۔ جس میںقابل اساتذہ کے ذریعے پاکستان کے دور دراز علاقوں میں جدید ٹیکنالوجی سے آراستہ سٹوڈیوکلاس روم کے ایک نیٹ ورک کے ذریعے لیکچرز فراہم کرنے کیلئے ای لرننگ کا قیام عمل میںلایاگیا۔ای لرننگ پروگرام کا مقصد تعلیمی استعدادکار کوبڑھانااور طالبعلموں تک تعلیم کی بہتر فراہمی ہے جس سے ان کے علم میںاضافہ ہوگا۔پاکستان کے دور دراز علاقوں بشمول گلف ممالک میں بڑھتی مائیگریشن کے پیش نظر ہر جگہ تعلیمی ادارے کا قیام کم عرصے میں ایک بہت بڑا چیلنج تھا جس کے لئے خطیر رقم درکار تھی۔لہذا اس چیلنج کو قبول کرتے ہوئے اوپی ایف نے دورجدید کے تقاضوں کے مطابق ٹیکنالوجی کے استعمال سے ایک پلیٹ فارم سے تمام جگہوں پر انٹرنیٹ کے ذریعے اعلیٰ تعلیم یافتہ اساتذہ کی زیر نگرانی لیکچر ز کی فراہمی کو ممکن بنادیا۔اب آپ جہاں بھی ہوں آپ کو اعلیٰ تعلیم یافتہ اساتذہ تک رسائی ممکن ہوگی۔ اوپی ایف بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کے حقوق کے تحفظ کے لئے بنایا جانے والاسرکاری ادارہ ہے جو کہ پچھلے تقریباََ 40سال سے سمندر پارپاکستانیوں کے مسائل کے حل کے لئے اپنی خدمات سرانجام دے رہا ہے۔اس ادارے نے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کے مسائل کو اجاگر کرنے میں اور حل کروانے میں بہت نمایاں کردار ادا کیا ہے۔اوپی ایف مستقبل میں اسی طرح فلاح بہبود کے شعبوں میں فعال کرداراداکر تا رہے گا۔اوپی ایف کے 24اعلیٰ تعلیمی ادارے جدید ٹیکنالوجی اور جدید سہولیات سے آراستہ اپنی خدمات سمندرپارپاکستانیوں کے بچوں کے لئے سرانجام دے رہے ہیں۔اس میںوفاقی وزیر برائے وزارت سمندرپارپاکستانیز وترقی انسانی وسائل،بورڈ آف گورنرز کے تمام ممبران اور اوپی ایف انتظامیہ میں مکمل ہم آہنگی ہے اور بورڈ آف گورنرز کی ہدایات اور پالیسیوں کے عین مطابق عمل کیا جاتا ہے۔