جوڈیشل کمپلیکس میں ملزم اور گواہ کا قتل،چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ راولپنڈی پہنچ گئے

30 مارچ 2018

راولپنڈی (اپنے سٹاف رپورٹر سے) جوڈیشل کمپلیکس میں فائرنگ سے ملزم اور گواہ کے قتل کی واردات کے بعد جمعرات کو لاہور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس محمد یاور علی راولپنڈی پہنچ گئے جوڈیشل کمپلیکس میں آئی جی پنجاب کیپٹن (ر) عارف نواز ، آر پی او وصال فخر سلطان ، سی پی او اسرار عباسی اور ایس ایس پی آپریشنز نے چیف جسٹس کو وقوعہ اور اس کے بعد کی پیشرفت کے بارے میں آگاہ کیا قبل ازیں آئی جی پنجاب کیپٹن (ر) عارف نواز جوڈیشل کمپلیکس پہنچے آئی جی پنجاب کے دورے کے بعد چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ محمد یاور علی جوڈیشل کمپلیکس پہنچے جنہیں آئی جی نے بتایا کہ فائرنگ کے واقعہ میں بھی حملہ آور سفید گاڑی میں بیٹھ کر جوڈیشل کمپلیکس میں داخل ہوا تھا گاڑی میں جو شخص وکیل کے ساتھ ہو اس نے چیکنگ نہیں کرنے دی جاتی جبکہ وکلاء نے فول پروف سیکیورٹی نہ ہونے کی شکائت کی چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے حکم دیا کہ پولیس فول پروف سیکیورٹی انتظامات یقینی بنائے اس موقع پر آئی جی پنجاب نے شکوہ کیا کہ سیکیورٹی کے سلسلے میں وکلاء تعاون نہیں کرتے جس پر چیف جسٹس نے پولیس حکام اور وکلاء سے کہا کہ وہ باہمی تعاون سے سیکیورٹی معاملات حل کریں اس موقع پر چیف جسٹس سے آئی جی پنجاب سمیت پولیس حکام نے الگ ملاقات کی جس میں ڈسٹرکٹ بار کے صدر نے جوڈیشل کمپلیکس کیلئے فول پروف سیکیورٹی کا مطالبہ بھی کیا چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے پولیس کو فول پروف سیکیورٹی کیلئے ہدایات جاری کیں قبل ازیں آئی جی پنجاب علی الصبح جوڈیشل کمپلیکس پہنچے اور وقوعہ کا جائزہ لیا ایس پی پوٹھوہار سید علی نے وقوعہ کے حوالے سے آئی جو تفصیلات بتائیں۔