انتخابات میں تاخیر کا حکومت اور عدالت کے پاس کوئی اختیار نہیں، لیاقت بلوچ

30 مارچ 2018

اسلام آباد (وقائع نگار خصوصی)جماعت اسلامی پاکستان اور متحدہ مجلس عمل کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے صدر متحدہ مجلس عمل مولانا فضل الرحمن سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا اور انہیں ایم ایم اے کے اعلیٰ سطحی مشاورت کی متفقہ تجاویز سے آگاہی دی ۔ چاروں صوبوں میں صوبائی تنظیموں کے انتخاب کے لیے صوبائی کونسلوں کے ممبران کی فہرست آخری مراحل میں ہے جس کے بعد پنجاب ، سندھ ، خیبر پی کے اور بلوچستان میں صوبائی انتخابات کا شیڈول جاری کردیا جائے گا ۔ متحدہ مجلس عمل بھر پور عوامی رابطہ کے ذریعے انتخابات 2018 ء میں بہتر ، مثبت نتائج لائے گی اور محبان اسلام کے لیے حوصلہ عزم اور ترقی کاذریعہ بنے گی ۔ لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ آئین کے آرٹیکل 224 کے مطابق اسمبلیاں معیاد پوری کرلیں تو ساٹھ دن کے اندر عام انتخابات کرانا لازم ہیں۔آئین کی متعین مدت میں انتخابات میں تاخیراور التواء کا حکومت یا عدالت کے پاس کوئی اختیار نہیں۔ ایسا کوئی بھی اقدام ملک و ملت اور جمہوریت کے لیے بڑے نقصان کا باعث ہوگا ۔ ملک انتشار کا شکار ہوگا ۔ مزاحمت ہوگی اور ملک دشمن قوتوں کا ہی فائدہ ہوگا ۔