ٹڈاپ سکینڈل یوسف گیلانی اور دیگر پر فرد جرم عائد، ملزموں کا الزامات ماننے سے انکار

30 مارچ 2018

کراچی ( آن لائن‘ این این آئی) اینٹی کرپشن عدالت نے ٹڈاپ سکینڈل میں سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی اور دیگرملزموں پر فرد جرم عائد کردی ہے۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی اینٹی کرپشن عدالت میں ٹڈاپ سکینڈل کی سماعت ہوئی جس کے دوران سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی سمیت دیگر ملزمان عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔ عدالت نے 26 مقدمات میں سابق وزیر اعظم سمیت دیگر ملزمان کے خلاف فرد جرم عائد کردی تاہم ملزمان نے صحت جرم سے انکار کردیا۔ دوران سماعت جب فرد جرم عائد کی گئی تو جج نے یوسف رضا گیلانی کو الزام پڑھ کر سنایا اور کہا ’آپ کے اکائونٹ میں 50 لاکھ روپے ٹرانسفر ہوئے ہیں جو آپ نے وزیر اعظم ہائوس میں وصول کیے، کیا آپ اس الزام کی تصدیق کرتے ہیں ؟‘۔ جج کے سوال پر پہلے تو یوسف رضا گیلانی اِدھر اْدھر دیکھتے رہے جس کے بعد انہوں نے پوچھا کیا یہ سوال مجھ سے کیا جارہا ہے؟۔ یوسف رضاگیلانی نے خود پر عائد کیے جانے والے الزامات کو غلط قرار دیا اور کہا کہ انہیں سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔عدالت نے استغاثہ کے گواہان کو 16 اپریل کو طلب کرتے ہوئے کیس کی مزید سماعت ملتوی کردی۔ 2012 میں ٹڈاپ سکینڈل سامنے آیا تھا جس میں قرار دیا گیا تھا کہ جعلی کاغذات کے ذریعے جعلی کمپنیوں کو اربوں روپے کا فائدہ پہنچایا گیا ہے۔ کیس میں سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی سمیت دیگر ملزمان کے خلاف 26 مقدمات قائم ہیں ، ملزمان پر فریٹ سبسڈی کی مد میں 7 ارب روپے کی کرپشن کا الزام ہے۔دیگر ملزمان میں طارق اقبال پوری، عبدالکریم دا ئود پوتا، محمد زبیراور عدنان زمان شامل ہیں۔ مقدمے میں 10سے زائد ملزمان اشتہاری بھی ہیں۔سماعت کے بعد عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو میں یوسف رضا گیلانی نے کہاانہوں نے ایک ہی درخواست کی کہ ان کا جو فرنٹ مین ہے وہ کون ہے اس کی شکل ہی دکھادیں۔سیاسی معاملات پر گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیراعظم نے کہا کہ میاں نواز شریف کو احساس ہوا کہ ان کی غلطی تھی۔ وزیراعظم کی چیف جسٹس سے ملاقات پرلوگ باتیں کررہے ہیں۔ اپنے دور میں ایک دفعہ چیف جسٹس کے پاس ڈنر میں گیا تھا جو میڈیا میں بھی آیاتھا۔
ٹڈاپ کیس