سندھ کابینہ کا خصوصی عدالتوں کے 3 ججوں کی دوبارہ تعیناتی سمیت متعدد قوانین منظور

30 مارچ 2018

کراچی (وقائع نگار) وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت سندھ کابینہ کا اجلاس سندھ سیکرٹریٹ میں منعقد ہوا، کابینہ اجلاس میں گزشتہ سندھ کابینہ کے منٹس کی منظوری کے علاوہ انسداد دہشتگردی عدالتوں کے تین ججز کی دوبارہ تعیناتی، سندھ ڈسپوزل آف اربن لینڈ آرڈیننس 2002 کے سیکشن( 2)10 میں ترمیم اور کے ڈی اے پرزینڈینشل آرڈر آف 157 کے آرٹیکل( A)25- کے ترمیمی قانون کی منظوری، ہوٹلز اینڈ ریسٹورنٹ مینجمنٹ قانون 2018، محکمہ ثقافت کے سروس سٹیٹس و بائی۔لاء بشمول شرائط سروس قوانین 1940 ترمیمی بل، عارضی ویٹرنری ڈاکٹرز کی مستقلی، سندھ قرآن (اشاعت، ریکارڈنگ اور ڈسپوزل آف ڈیمیج/شہید اوراق) قوانین 2018، مغربی پاکستان ہائی وے قوانین 1959 میں ترمیم، بجٹ حکمت عملی، محکمہ صحت کے ایڈیشنل آئٹم سمیت صوبے کے دوردراز خشک سالی سے متاثرہ علاقوں میں مفت گندم تقسیم کرنے سے متعلق امور زیر بحث لائے گئے اور منظوری بھی دی گئی۔ وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت سندھ کابینہ کا اجلاس سندھ سیکریٹریٹ میں منعقد ہوا، کابینہ اجلاس میں گزشتہ سندھ کابینہ کے منٹس کی منظوری کے علاوہ انسداد دہشتگردی عدالتوں کے تین ججز کی دوبارہ تعیناتی، سندھ ڈسپوزل آف اربن لینڈ آرڈیننس 2002 کے سیکشن( 2)10 میں ترمیم اور کے ڈی اے پرزینڈینشل آرڈر آف 157 کے آرٹیکل( A)25- کے ترمیمی قانون کی منظوری، ہوٹلز اینڈ ریسٹورنٹ مینجمنٹ قانون 2018، محکمہ ثقافت کے سروس اسٹیٹس و بائے۔لائ￿ قانون، قانونی افسران(بشمول شرائط سروس) قوانین 1940 ترمیمی بل، عارضی ویٹرنری ڈاکٹرز کی مستقلی، سندھ قرآن(اشاعت، رکارڈنگ اور ڈسپوزل آف ڈیمیج/شہید اوراق) قوانین 2018، مغربی پاکستان ہائی وے قوانین 1959 میں ترمیم، بجٹ حکمت عملی پیپلز 19-2018 سے 21-2020، محکمہ صحت کے ایڈیشنل آئٹم سمیت صوبے کے دوردراز خشک سالی سے متاثرہ علائوں میں مفت گندم تقسیم کرنے سے متعلق امور زیر بحث لائے گئے اور منظوری بھی دی گئی۔سندھ کابینہ کے پہلے ایجنڈے میں انسداد دہشتگردی عدالتوں کے متعلق معاملہ زیر بحث لایا گیا جس میں سندھ ہائی کورٹ نے انسداد دہشتگردی عدالتوں کے تین ججز کی دوبارہ تعیناتی پر غور کیا ہے جبکہ سندھ کابینہ نے سندھ ہائی کورٹ کی گائیڈلائین کے پیشنظر مجوزہ ججز کی تعیناتی سے متعلق سندھ ایڈووکیٹ جنرل کو ہدایات دے دی ہیں جس پر آئندہ سندھ کابینہ اجلاس میں بحث کیا جائے گا۔ سندھ کابینہ اجلاس کے تیسرے ایجنڈا میں محکمہ بلدیات سے متعلق سندھ ڈسپوزل آف اربن لینڈ آرڈیننس 2002 کے سیکشن( 2)10 اور کے ڈی اے پرزینڈینشل آرڈر آف 157 کے آرٹیکل( A)25- ترمیمی قوانین پر بحث کیا گیا جس میں بتایا گیا کہ سرجانی ٹاؤن میں 12 ایکڑ ایمنٹی پلاٹ کے 8 ایکڑ پر گرین لائین بی آر ٹی بس ڈپو بنانا ہے، جس پر سندھ کابینا نے منظوری دیتے ہوئے فیصلہ کیا ہے کہ باقی 8 ایکڑ ایراضی پر پارک بھی بنایا جائے گا۔ اس موقع پر وایراعلیٰ سندھ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مجوزہ ترمیم صرف عوام کے مفاد کو مدنظر رکھ کر منظور کر رہی ہے اور سندھ کنٹرول بلڈنگ اتھارٹی قوانین میں ترمیم سے متعلق سندھ اسمبلی سے بھی منظوری لی جائے گی۔ جس پر سندھ کابینہ نے مجوزہ قانون سندھ اسمبلی کی اسٹیڈنگ کمیٹی بھجوانے کا فیصلہ کیا۔ سندھ کابینہ میں مغربی پاکستان ہائی وے قوانین 1959 میں ترمیم سے متعلق مسودہ پر غور بھی کیا گیا، ترمیم کے تحت سپر ہائی وے(ایم۔نائین) کے دائیں اور بائیں جانب 50 کلومیٹر رائٹ آف وے ہونا ہے جس پر سندھ کابینہ نے مجوزہ قانون منظور کرکے سندھ اسمبلی بھیجنے کا فیصلہ کیا۔ علاوہ ازیں سندھ کابینہ اجلاس میں سینئر صوبائی وزیر نثار کھڑو نے سندھ۔بلوچستان کے سرحدی علائقے کوٹے جی قبر پر بلوچستان اسمبلی اور خضدار کے ضلع کاؤنسل کی جانب سے اٹھائے گئے معاملے پر اظہار خیال کرتے ہوئے آگاہی دی کہ یہ علائقہ سندھ کا ہے جوکہ قدیمی نقشوں میں بھی موجود ہے، صحیح جواب ہم سندھ اسمبلی سے دیں گے چونکہ متعلقہ معاملہ بلوچستان اسمبلی سے اٹھایا گیا ہے۔
سندھ کا بینہ