جمہوریت عوام کی خواہش، سیاسی جماعتیں ایک ہو جائیں، ملا لہ

30 مارچ 2018

اسلام آباد (وقائع نگار خصوصی+ آئی این پی +بی بی سی) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے ملالہ یوسفزئی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیا نے آپ کو عزت دی، پاکستان بھی عزت دے گا، یہ آپ کا گھر ہے، جب آنا چاہیں آئیں، اب آپ عام شہری نہیں، آپ کی سکیورٹی ہم پر لازم ہے۔ وزیراعظم نے ملالہ یوسفزئی کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا دنیا نے ملالہ کو عزت دی پاکستان بھی آپ کو عزت دے گا۔ جب آپ گئیں تو پاکستان میں دہشت گردی عروج پر تھی۔ ہم نے بہت مشکل جنگ لڑی جس کا شکار آپ خود ہوئیں۔ ہماری فوج، سول آرمڈ فورسز کے جوان اور شہریوں کی قربانیوں سے ملک میں امن ہے۔ ہم آج بھی دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑرہے ہیں اور یہ جنگ لڑتے رہیں گے۔ شاہد خاقان عباسی نے کہا ہمارے لوگ جانوں کا نذرانہ دے کر دنیا کو امن دے رہے ہیں۔ چاہتا ہوں آپ ہمارا پیغام دنیا کو پہنچائیں آپ دنیا کی اور پاکستان کی نمائندگی کرتی ہیں۔ آپ کے نوجوانوں اور بچیوں کی جو نمائندگی کی ہے وہ ہم سب کے لیے مشعل راہ ہے۔ میری کوشش ہے دعا ہے کہ اللہ آپ کو کامیاب کرے۔ وزیراعظم نے تقریر کے آخر میں ویلکم ہوم ملالہ کہا۔ ملالہ یوسفزئی نے کہا اگر میں چاہتی تو کبھی اپنا ملک نہ چھوڑتی، پچھلے پانچ سال سے میں پاکستان میں قدم رکھنے کا سوچ رہی ہوں۔ وطن آنے پر بہت خوش ہوں۔ دنیا کے ہر حصے میں پاکستان کے بارے میں سوچتی ہوں۔ میں 1999 میں پیدا ہوئی ابھی بیس برس کی ہوں ۔2007 میں ہمارے علاقہ سوات میں دہشت گردی کا آغاز ہوا۔ مجھ پر حملہ ہونا اور ملک سے باہر جانا سارے واقعات میرے سامنے ہیں۔ مگر مجھے مزید علاج کے لئے باہر جانا پڑا میرا خواب تھا کہ میں پاکستان واپس آکر تعلیم حاصل کروں۔ پاکستان کا مستقبل تعلیم سے جڑا ہے۔ ملالہ فنڈ اس مقصد کے لئے پہلے سے کام کررہا ہے۔ ہمیں بچوں کی تعلیم پر خرچ کرنا چاہئے۔ ہم اب تک چھ ملین ڈالر تعلیمی مقاصد کے لئے پاکستان میں لگا چکے ہیں۔ ہم خواتین پر محنت کررہے ہیں تاکہ وہ اپنے پائوں پر کھڑی ہو جائیں یہ بہت ضروری ہے۔ میں اپنے لوگوں سے ملنے آئی ہوں۔ ملالہ یوسفزئی نے کہا کہ ہم تعلیم کے حوالے سے بین الاقوامی سطح پر کام کررہے ہیں۔ مجھے ابھی یقین نہیں آرہا کہ میں پاکستان میں ہوں۔ سب کو مل کر پاکستان کے لئے کام کرنا چاہئے۔ وزیراعظم ہائوس میں تقریب سے خطاب کے دوران ملالہ یوسفزئی وطن واپسی کا ذکر کرتے ہوئے آبدیدہ ہوگئیں۔ ملالہ نے حاضرین کو پشتو میں بھی خوش آمدید کہا۔ ملالہ یوسفزئی نے کہا تمام سیاسی جماعتوں کو ایک ہونا چاہئے، جمہوریت پاکستانی عوام کی خواہش ہے۔ قبل ازیں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے ملالہ یوسفزئی نے ملاقات کی۔ بی بی سی کے مطابق ملالہ نے خطاب میں کہا کہ پاکستان واپسی ان کے لیے سب سے زیادہ خوشی کا موقع ہے۔ ’یہ سب سے خوشی کا دن ہے کہ میں اپنے وطن واپس آئی ہوں، اپنی مٹی پہ کھڑی ہوں اور اپنے لوگوں سے مل رہی ہوں۔‘ جب انہیں اپنا وطن یاد آتا تو انگلینڈ کے شہروں میں سفر کرتے ہوئے جہاز یا گاڑی میں بیٹھے میں خود سے کہتی کہ ’تصور کرو کہ تم اپنے شہر میں ہو، یہی پاکستان کے شہر ہیں۔ لیکن میں جانتی تھی کہ وہ سچ نہیں تھا۔'میرا ہمیشہ یہی خواب تھا کہ میں پاکستان جاؤں اور بنا کسی خوف کے سڑکوں پر چل سکوں اور لوگوں سے مل سکوں، بات کر سکوں اور میرا گھر ویسا ہی ہو جیسا پہلے تھا۔ میں امید کرتی ہوں کہ پاکستان کی بہتری کے مقصد میں ہم ساتھ کام کریں۔ خاص طور پر عورتوں کو اتنا اختیار ہو کہ وہ ملازمت کر سکیں، اپنے قدموں پر کھڑی ہو سکیں۔
ملالہ