جسٹس ہانی مسلم نے گاڑی واپس کر دی

30 مارچ 2018

کراچی (وقائع نگار) واٹر کمیشن کے سربراہ جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم نے صوبائی حکومت کی جانب سے بھجوائی گئی برانڈ نیو ٹویوٹا فارچون گاڑی استعمال کرنے سے انکار کرتے ہوئے واپس بھجوا دی‘ مذکورہ گاڑی کی مالیت نصف کروڑ سے زائد ہے۔ واٹر کمیشن سربراہ نے نئی گاڑی واپس کرتے ہوئے وزیراعلیٰ ہائوس کے زیراستعمال رہنے والی استعمال شدہ ٹویوٹا فارچون گاڑی استعمال کرنے پر اکتفا کر لیا ہے۔ اس سے قبل حکومت سندھ نے تین مرتبہ واٹر کمیشن سربراہ کی گاڑی تبدیل کی‘ ابتدا میں دو مرتبہ ٹویوٹا کار بھجوائی گئی جس میں سے ایک کار آگے سے لگی ہوئی تھی‘ ایکسیڈنٹ شدہ اس کار کو صوبائی حکومت نے خود تبدیل کیا پھر وزیراعلیٰ ہائوس سے ایک جیپ بھجوائی گئی جسے واپس بھجوا دیا گیا۔ سرکاری ذرائع کے مطابق واٹر کمیشن کے سربراہ کو سپریم کورٹ سے ریٹائرمنٹ کے موقع پر ملنے والی تنخواہ اور مراعات کے لگ بھگ تنخواہ اور مراعات فراہم کرنے کی منظوری دی گئی ہے جبکہ سرکاری گاڑی کے ساتھ 600 لیٹر پٹرول بھی فراہم کیا جا رہا ہے۔
واٹر کمیشن سربراہ/ گاڑی واپس