کے الیکٹرک نے کراچی میں غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا اعتراف کرلیا

30 مارچ 2018

کراچی (اسٹاف رپورٹر) کے الیکٹرک نے کراچی میں غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا اعتراف کرلیا۔ صارفین کے نام پیغام جا ری کرتے ہوئے کے الیکٹرک نے کہا ہے کہ مختلف علاقوں میں لوڈ مینجمنٹ کی جا رہی ہے اس قسم کے پیغامات نئی کراچی بفرزون اولڈ گولیمار‘ بلدیہ ٹائون‘ مدینہ کالونی‘ ناظم آباد اور نارتھ ناظم آباد‘ کھوکھراپار‘ ملیر‘ لیاری ‘ اورنگی‘ منظور کالونی اور اعظم بستی کے صارفین کو کئے گئے۔ ان علاقوں میں دو سے تین گھنٹے تک بجلی کی لوڈ شیڈنگ کی گئی۔ مختلف علاقوں میں رات بھر بجلی کی آنکھ مچولی جاری رہی۔ دریں اثناء کے الیکٹرک کے ترجمان نے کہاہے کہ درجہ حرارت میں اضافے کے ساتھ ہی بجلی کی طلب قریباً2600میگا واٹ تک پہنچ گئی ہے۔کے الیکٹرک کو ای سی سی کی جانب سے مختص کی گئی 276ایم ایم سی ایف ڈی گیس کی فراہمی کے مقابلے میں اس وقت صرف 90ایم ایم سی ایف ڈی گیس مل رہی ہے جو گزشتہ سال اس وقت فراہم کی جانے والی گیس سپلائی کی سطح سے نہایت کم ہے۔گیس سپلائی میں کمی کی وجہ سے 500میگا واٹ کی گیس سے پیداوار کرنے والے پلانٹس کام نہیں کررہے اورسسٹم میں اضافی شارٹ فال کا باعث بن رہے ہیں۔بجلی کی طلب میں اضافے کی وجہ سے شارٹ فال بڑھنے کا بھی امکان ہے۔اس اضافی شارٹ فال کے باعث رہائشی اورتجارتی علاقوں کو ایک گھنٹے کے عارضی تعطل کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے جبکہ صنعتی صارفین کووقفے وقفے سے اوسطاً چار گھنٹے کے تعطل کا سامنا رہے گا۔لوڈ مینجمنٹ کے باعث مختلف علاقوں میں وقفے وقفے سے بجلی کی فراہمی میں تعطل لیا جارہاہے ۔صارفین کو کسٹمر سروس اور ڈیجیٹل پلیٹ فارمز کے ذریعے انفرادی طور پر اوقات کار بتانے کیلئے کوششیں کی جارہی ہیں اور ہم اس پورے عمل کے دوران آپ کے تعاون اور صبرکی درخواست کرتے ہیں۔
کے الیکٹرک اعتراف