منتخب وزیراعظم کو نکال کر آج تک ثبوت ڈھونڈے جارہے ہیں، مریم اورنگزیب

30 مارچ 2018

اسلام آباد (نامہ نگار) وزیرمملکت برائے اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ واجد ضیا قانونی نکات پر جواب دینے سے پھر قاصر تھے، نیب کے سٹار گواہ نے نواز شریف کے حق میں بیان دیا،یہ کونسی جے آئی ٹی تھی جو قانون سے بالاتر ہو کر اپنے اتفاق رائے پر کام کررہی تھی،شریف خاندان کا جس خط پر سارا ریکارڈ تھا وہ گواہ خود کہہ رہا ہے کہ مجھے سوالنامہ بھیج دیں لیکن نہیں بھیجا گیا،ملالہ یوسفزئی کا پاکستان میں آنا دہشتگردی کو شکست ہے۔جمعرات کو احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیرمملکت برائے اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا کہ دہشت گردی کی وجہ سے جو لوگ ملک سے چلے گے تھے آج واپس آ رہے ہیں،دہشت گردی کے خلاف یہ بہت بڑی کامیابی ہے۔ملالہ یوسفزئی کا پاکستان میں آنا دہشتگردی کو شکست ہے۔ انہوںنے کہا کہ نیب کے سٹار گواہ نے آج پھر نواز شریف کے حق میں بیان دیا،29سال کا تجربہ رکھنے والے واجد ضیا کو یہ نہیں پتہ کہ کونسا قانون انکو قطری شہزادے کو سوالنامہ بھیجنے سے روکتا تھا،آج پھر واجد ضیا قانونی نکات پر جواب دینے سے قاصر تھے، اسی وجہ سے وہ غصہ ہوئے، واجد ضیا نے کمرہ عدالت میں تسلیم کیا کہ جے آئی ٹی میں سوالنامہ بھیجنے پر اتفاق رائے نہیں ہوسکا تھا۔ مریم اورنگزیب نے کہا کہ منتخب وزیراعظم کو نکال کر آج تک ثبوت ڈھونڈیں جارہے ہیں،آج تک وہ صندوق کی چابیاں جو واجد ضیا کے پاس ہیں ان سے کچھ نہیں نکلا۔ پی ٹی وی کے حوالے سے سوال پرمریم اورنگزیب نے کہا کہ دو فلور کیا ایک اینٹ بھی کسی کو نہیں دی گئی۔
مریم اورنگزیب