کراچی کو اصل مقام دلانا، انفرااسٹرکچر کی ترقی ترجیح ہے: گورنر سندھ

30 مارچ 2018

کراچی (وقائع نگار)گورنر سندھ محمد زبیر نے کہا کہ حکومت کی جامع اور مربوط حکمت عملی کے باعث سال 2016کے بعد سے کراچی بند نہیں ہوااور نہ ہی ایک دن بھی کوئی ہڑتال ہوئی ،حکومت کے غیر متزلزل عزم اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی انتھک محنت اور کاوششوں کے باعث کراچی کی رونقیں دوبارہ بحال ہوئی ہیں اور شہر کے باسی سماجی، ثقافتی ،ادبی ، معاشی اور کھیلوں کی سرگرمیوں سے لطف اندوز ہورہے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرزا اشتیاق بیگ کی سربراہی میں معروف تاجروں اور کاروباری شخضیات کے ایک وفد سے خطاب میں کیا، وفد میں انور قریشی ،حلیم صدیقی ،زاہد سعید ،عبد السمیع خان ،عار ف حبیب ، خالد تواب،محسن شیخانی اور امتیاز عباسی بھی شامل تھے۔ گورنر سندھ کا کہنا تھا حکومت کو سال 2013سے ملک میں امن و امان کے قیام اور انرجی بحران جیسے چیلنجز کا سامنا تھا جن کا ہم نے ڈٹ کر مقابلہ کیا ،کراچی میں امن وفاقی حکومت کے سیاسی عزم اور مثبت سوچ کی بدولت ہی آیاجس میں قانون نافذ کرنے والے اداروں نے بھرپور کردار ادا کیا۔ گور نر سندھ نے وفد کو حکومت کی طرف سے ملک کی معاشی ترقی کو دوبارہ مستحکم او ر مضبوط بنانے کے لیے جانے والے اہم اقدامات کی تفصیلا ت سے آگاہ کیا جس پر وفد کے ارکان نے گورنر سندھ کا شکریہ ادا کیا۔دریں اثناء گورنر سندھ محمد زبیر نے کہا ہے کہ ڈیجیٹل بینکنگ دور حاضر کی اہم ضرورت ہے جس کے لئے نجی شعبے کے بنک حکومتی اداروں کے ساتھ مل کر جدید بنکاری تک عوام کی رسائی ممکن بنانے میں اپنا موثر کردار ادا کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے دوسری ڈیجیٹل بینکنگ اینڈ موبائل پے مینٹس سمٹ 2018 سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ گورنر سندھ نے کہا کہ اس سلسلے میں وفاقی وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی آئی ٹی کمپنیاں اور پرائیویٹ بینک رابطے میں ہیں اور بہت جلد ملک میں ڈیجیٹل بینکنگ اور موبائل پے مینٹس کے مزید آسان طریقہ کار وضع کئے جائیں گے ۔