ایرانی سر ما یہ کار کراچی کی استعداد سے بھر پور فائدہ اٹھائیں، گورنر سندھ

30 مارچ 2018

کراچی ( وقائع نگار )گورنر سندھ محمد زبیر نے کہا ہے کہ پاکستان اور ایران اسلامی اخوت بھائی چارہ کے لازوال رشتہ سے منسلک ہیں جبکہ تاریخی اعتبار سے بھی دونوں ممالک کے عوام ایک دوسرے سے نہایت قریب ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایران کی خارجہ امور کی حکمت عملی کونسل کے سربراہ اور سابق وزیر خارجہ کمال خرازی کے ہمراہ آنے والے وفد سے گورنر ہاﺅس میں ملاقات کے دوران کیا۔ وفد کے اراکین میں ،رسول اسلامی، مہدی مصطفوی، باقر خرم شاد، عبدالرضا، سیف اللہ طاھری ،قونصل جنرل احمد محمدی، ڈپٹی قونصل جنرل محمد نصیر اور عبد الرضا سلطان شامل تھے ۔ گورنر سندھ نے کہا کہ پاک ایران تجارت میں اضافہ کے لئے اقدامات کی اشد ضرورت ہے کیونکہ اس سے دونوں ممالک کی معیشت کو بہت زیادہ فائدہ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک کے منصوبوں کے باعث پاکستان میں انفرا اسٹرکچر کی بہتری کے لئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک نہ صرف پاکستان بلکہ پورے خطہ کے لئے گیم چینجر کی حیثیت رکھتا ہے اس سے نہ صرف پاکستان میں معاشی انقلاب برپا ہوگا بلکہ چین کو بھی خطیر زر مبادلہ کی بچت ہوگی۔ انہوں نے کہاکہ ایرانی سرمایہ کار سرمایہ کاری کے ضمن میں کراچی کی استعداد سے بھرپور فائدہ اٹھا سکتے ہیں کیونکہ امن و امان کے قیام اور توانائی کی صورتحال میں بہتری کے باعث یہ شہر سرمایہ کاری کے لئے آئیڈیل حیثیت اختیار کر گیا ہے۔ گورنر سندھ محمد زبیر نے کہا ہے کہ ذوالفقار علی بھٹو کی نیشنلائیزیشن کی پالیسی سے کراچی کو سب سے زیادہ نقصان ہوا کوٹہ سسٹم ختم ہوناچاہیے بلدیاتی نمائندوں کو اختیارات ملنا چاہیے لندن اور نیو یارک کی طرح کراچی اہم ہے جس طرح امریکہ کو نیو یارک اور برطانیہ کو لندن اجاگر کرتا ہے اس طرح پاکستان کا چہرہ کراچی ہے وہ جمعرات کی شب بلدیہ وسطی کے دورے پر خطاب کررہے تھے انہوں نے کہا کہ چیئرمین بلدیہ وسطی میرے پرانے دوست ہیں انہوں نے کہا کہ کراچی کی معیشت دنیا کا تیسرا ملک ہے جس کی اقتصادیات اوپر جارہی ہے حکومت سندھ بلدیاتی اداروں کو اختیارات دے۔ بلدیاتی اداروں کو کوڑا اٹھانے کا بھی اختیار نہیں۔ کراچی کے اسٹیک ہولڈرز کوٹہ سسٹم کے خلاف آواز بلند کیوں نہیں کرتے۔ انہوں نے کہا کہ ضلع وسطی ہی اصل کراچی ہے۔ ہجرت کرنے والوں نے کراچی کو معاشی حب بنایا اور کارخانے لگائے۔
گورنر سندھ

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...