ننکانہ : ٹرانسپورٹرز کا زائد کرایہ وصول کرنیکا سلسلہ بدستور جاری‘ ضلعی انتظامیہ خاموش تماشائی

30 جون 2013

ننکانہ صاحب (نمائندہ نوائے وقت) ننکانہ صاحب سے دوسرے شہروں کو جانے والے تمام روٹس پر پبلک ٹرانسپورٹ کے عملے کا مسافروں سے زائد کرایے ڈنکے کی چوٹ پر وصول کر نے کا سلسلہ بدستور جاری ہے ٹرانسپورٹرز حکومت کے ڈیزل کی قیمت کے مطابق مقرر کردہ کرائے1روپے 10پیسے فی کلو میٹر کے برعکس ننکانہ سے لاہور تک 75 کلو میٹر فاصلے کا کرایہ90روپے کی بجائے100 روپے، ننکانہ سے جڑانوالہ تک 32 کلو میٹر فاصلے کا کرایہ 35 روپے کی بجائے40 روپے،ننکانہ سے فیصل آباد تک 70 کلومیٹر فاصلے کا کرایہ 77 روپے کی بجائے 100روپے،ننکانہ سے شاہکوٹ تک28 کلو میٹر فاصلے کا کرایہ30 روپے کی بجائے60 روپے، ننکانہ سے موڑ کھنڈا تک 25کلومیٹر فاصلے کا کرایہ 28 روپے کی بجائے40 روپے،ننکانہ سے مانانوالہ تک 17کلومیٹر فاصلے کا کرایہ20روپے کی بجائے30 روپے، ننکانہ سے بچیکی تک 16 کلو میٹر فاصلے کا کرایہ 18 روپے کی بجائے30 روپے و صول کر رہے ہیں جبکہ مذکورہ تمام روٹس پر ٹرانسپورٹرز سی این جی کی قیمت کے مطابق مقرر کردہ کرائے 79 پیسے فی کلو میٹر کا سرے سے اطلاق ہی نہیں کرتے اور نہ ہی بسوں اور ویگنوں میںکرائے نامے آویزاں کرتے ہیں اور اگر کوئی مسافر زیادہ کرایے پر تکرار کرے یا ان سے کرایہ نامہ مانگ لے تو بسوں کا عملہ نہ صرف ان کے ساتھ بدتمیزی کے ساتھ پیش آتا ہے بلکہ وہ ایسے مسافرکو گاڑی سے نیچے اتارنے سے بھی گریز نہیں کرتے۔ مذکورہ روٹس پر سفر کرنے والے مسافروں نے بتایا ہے کہ ٹرانسپورٹروں نے کرایوں کا تعین کرنے میں اپنی رٹ قائم کر رکھی ہے اور ارباب اختیار کی طرف سے اس کی مناسب روک تھام نہ ہونے کی وجہ سے ٹرانسپورٹرز نے ہر ہفتے نئے کرایوں کا تعین کرنا اپنا وطیرہ بنا رکھا ہے۔ انہوں نے وزیراعلی پنجاب میاں شہبازشریف سے مطالبہ کیا ھے کہ وہ کرایوں کی اوورچارجنگ کو عوام کا گھمبیر مسئلہ سمجھتے ہوئے ٹرانسپورٹرز کے خلاف کریک ڈاﺅن کرنے کے فی الفور احکامات جاری کریں تاکہ کرایوں کی اوور چارجنگ کی روک تھام سے عوام کو سکھ کا سانس مل سکے جبکہ ڈسٹرکٹ ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی مس مائرہ نے بتایا کہ ٹرانسپورٹرز کو میں نے بسوں اور ویگنوں میں دو بار کرائے نامے آویزاں کرنے کے لئے دیئے ہیںمگر وہ اس پر عملدرآمد نہیں کرتے۔ اگر ٹرانسپورٹرز نے کرائے نامے آویزاں نہ کئے اور مسافروں سے یونہی کرایوں کی اوورچارجنگ جاری رکھی تو میں بہت جلد ان کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لاوں گی تاہم جب ان سے پوچھا گیا کہ پنجاب گورنمنٹ نے ڈیزل کے ریٹ کے مطابق فی کلو میٹر کا کیا کرایہ مقرر کیا ہے تو ا نہوں نے1روپیہ 20 پیسے بتایا جبکہ کرائے ناموں پر1روپیہ10پیسے لکھا گیا ہے۔ مزید براں جب ڈی سی او ننکانہ غلام فرید سے کرایوں کی مزکورہ اوورچارجنگ کے بارے میں پوچھا گیا تو انہوں نے اس پر انتہائی حیرانگی کا اظہار کرتے ہوئے اسکی روک تھام کا یقین دلایا۔