کوئٹہ: گولیوں سے چھلنی 3 نعشیں برآمد، خاران اور چمن میں 4 افراد قتل

30 جون 2013

کوئٹہ (بیورو رپورٹ) کوئٹہ سے پولیس نے 3 نامعلوم افراد کی گولیوں سے چھلنی نعشیں برآمد کر لیں۔ دو نعشوں کی شناخت کر لی گئی جنہیں ورثا کے حوالے کر دیا گیا۔ مشرقی بائی پاس پر واقع سستی بستی کے قریب کیو ڈی اے قبرستان کے قریب سے گزرنے والے برساتی نالے سے 3 نامعلوم افراد کی نعشیں ملیں۔ پولیس کے مطابق تینوں افراد کو سر اور سینے پر گولیاں مار کر قتل کیا گیا ہے۔ جائے وقوع سے ایک ٹی ٹی پسٹل اور 9 ایم ایم پسٹل کی گولیوں کے 5 خول بھی ملے ہیں۔ بلوچستان کے علاقے ژوب میں گھر پر دستی بم سے حملہ جانی نقصان نہیں ہوا جبکہ 4 نامعلو م مسلح افراد نے فائرنگ کر کے ایک شخص کو زخمی کر دیا۔ چمن کے علاقے میں دو گرپووں میں تصادم کے نتیجے میں 2 افراد جاںبحق جبکہ ایک زخمی ہو گیا۔ علاوہ ازیں خاران میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے پنجاب سے تعلق رکھنے والے علی شیر اور اصغر علی کو ہلاک کر دیا۔ علاوہ ازیں کوئٹہ سے فرنٹیئر کور کے عملے نے دوران چیکنگ کوئٹہ سے پنگجور جانے والی کوچ سے 14 افغان باشندوں کو گرفتار کر کے پولیس کے حوالے کر دیا۔ ادھر بلوچ نیشنل موومنٹ کی خواتین نے احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے لاپتہ افراد کی عدم بازیابی اور تشدد زدہ نعشوں کے ملنے کے واقعات پر انسانی حقوق کی تنظیم اور انصاف کے اداروں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ انصاف کے اداروں کی خاموشی برقرار رہی تو انتشار اور انارکی پھیلے گی۔