پٹواری مافیا سے نجات کیلئے اہیلپ لائن قائم کی جائے

30 جون 2013

مکرمی! محکمہ مال کے پٹواریوں نے لوٹ مار کا بازار گرم کر کے اراضی وغیرہ کی خرید وفروخت کے سلسلہ میں عوام کو بے حد پریشان کر رکھا ہے، قدم قدم پر پٹواری حضرات لوگوں سے ناجائز پیسے بٹور کر اپنی جیبیں بھر رہے ہیں، ذاتی منفعت کی خاطر محکمہ مال کے پٹواری اراضی وغیرہ کی خریدوفروخت کے سلسلہ میں خریدار کو رجسٹری کی بجائے انتقال کی ترغیب دیتے ہیں اس طرز عمل سے پٹواری اراضی کی قیمت حقیقی قیمت سے کم ظاہر کر کے فریقین سے سرکاری فیس سے کہیں زیادہ پیسے بٹورتے ہیں ”فرد“ کے حصول کیلئے بھی پٹواری چار سو سے پانچ سو روپیہ وصول کر کے لوگوں پر ناجائز بوجھ ڈالتے ہیں جبکہ گورنمنٹ فیس سو روپیہ سے بھی کم ہے۔ایک اہم پہلو یہ بھی ہے کہ رجسٹری کروانے کے باوجود پٹواری حضرات زمین کا انتقال چڑھانے کا بھی لوگوں سے ناجائز معاوضہ طلب کرتے ہیں حالانکہ رجسٹری کروانے سے پہلے انتقال فیس بھی ادا کر دی جاتی ہے۔ اصلاح احوال کی خاطر حکومت سے پر زور مطالبہ کیا جاتا ہے کہ پٹواریوں کی لوٹ مار سے بچنے کی خاطر باقاعدہ ہیلپ لائن قائم کی جائے تاکہ عوام کے ساتھ ہونیوالی ناانصافیوں کا ازالہ ہو سکے۔ (ابوسعدیہ سید جاوید علی شاہ امام صاحب سیالکوٹ)

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...