پٹرولیم مصنوعات میں اضافے سے مہنگائی بڑھے گی

30 جون 2013

اوگرا نے نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر مشتمل سمری وزارت پٹرولیم کو ارسال کردی ہے۔ پٹرولیم مصنوعات کی تجویز کی گئی نئی قیمتوں میں جی ایس ٹی 16 فیصد کی بجائے 17 فیصد شامل کیا گیا ہے۔
پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے باعث اشیاءخوردونوش سمیت ہر استعمال کی چیز مہنگی ہو جائیگی جبکہ ٹرانسپورٹر پٹرول کی قیمتوں سے بڑھ کر کرائے بڑھا لیں گے۔ اس بات میں کوئی دورائے نہیں کہ پٹرول کی قیمتیں عالمی مارکیٹ کی قیمتوں کے ساتھ نیچے اوپر ہوتی ہیں لیکن حکومت کی ذمہ داری بنتی ہے کہ جب پٹرولیم مصنوعات سستی ہوں تب دیگر اشیاءکی قیمتوں کو بھی نیچے لایا جائے لیکن ہمارے ہاں اضافہ تو فی الفور کر لیا جاتا ہے لیکن کمی نہیں کی جاتی۔ حکومت کو اس جانب بھی توجہ کرنی چاہیے۔ تیل کی قیمتیں 28 تاریخ کو بڑھنے کا اعلان ہوا تھا جبکہ منافع حاصل کرنے کی خاطر شہروں میں اکثر و بیشتر پٹرول پمپس مالکان نے سپلائی بند کر دی ہے۔ عوام ذلیل و رسوا ہو رہے ہیں حکومت اس بات کو بھی یقینی بنائے کہ ذخیرہ اندوزی کا قلع قمع کیا جا سکے۔ہالہ میں تیل اور گیس کے نئے ذخائر دریافت ہوئے ہیں۔ اس ضمن میں 2 برطانوی کمپنیوں سے معاہدے بھی کر دیئے گئے ہیں ان ذخائر سے 14 ملین مکعب فٹ گیس اور 125 بیرل تیل یومیہ حاصل ہوگا۔ اس سلسلے میں کوشش کرنی چاہیے کہ ان ذخائر پر کام کو تیزکیا جائے تاکہ عوام ان کے ثمرات سے جلد مستفید ہو سکیں۔