سراج الحق نے پارلیمنٹ میں حلف نہ لینے کی فضل الرحمان کی تجویز مسترد کردی

Jul 30, 2018 | 14:30

ویب ڈیسک

لاہور: متحدہ مجلس عمل کے نائب صدر سراج الحق نے پارلیمنٹ سے حلف نہ لینے کی مولانا فضل الرحمان کی تجویز مسترد کردی۔

جماعت اسلامی کے مرکز منصورہ میں پریس کانفرنس کے دوران سراج الحق نے کہا کہ مخالفت برائے مخالفت کے قائل نہیں، پورے وقار کے ساتھ اپوزیشن میں بیٹھیں گے اور بھرپور اپوزیشن کا کردار ادا کریں گے۔

نائب صدر ایم ایم اے نے کہا کہ ہم نے با کردار قیادت کو انتخابی عمل کا حصہ بنایا لیکن اداروں کی بہت زیادہ مداخلت نے رائے عامہ کو متاثر کیا اور قومی و سیاسی قیادت کو منظر سے ہٹانے کے لیے ایڑی چوٹی کا زور لگایا گیا۔

سراج الحق نے کہا کہ کراچی سے دیر اور چترال تک انتخابی نتائج بروقت جاری نہ کیے جاسکے اور الیکشن کے پورے عمل کو مشکوک بنایا گیا، افسوس کہ پولنگ ایجنٹس کو باہر نکال کر ووٹوں کی گنتی کا عمل شروع کیا گیا۔

  سراج الحق نے کہا کہ جمہوریت کی گردن پر انگوٹھا رکھ کر اس کی روح نکالنے کی کوشش کی گئی تاہم شدید تحفظات کے باوجود نئی حکومت کو کام کرنے کا موقع دینا چاہتے ہیں، پاکستان کو مدینہ جیسی ریاست بنانے کے عمران خان کا وعدہ پورا ہونے کا انتظار کریں گے۔ان کا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ کے اندر اور باہر جمہوریت کے استحکام کے لیے بھرپور اپوزیشن کا کردار ادا کریں گے۔

دوسری جانب ذرائع کا کہنا ہے کہ متحدہ مجلس عمل کا ہنگامی اجلاس اسلام آباد میں طلب کرلیا گیا جس کے دوران پارٹی صدر مولانا فضل الرحمان کو اسمبلی میں اپوزیشن کرنے پر قائل کرنے کی کوشش کی جائے گی اور ان سے حلف نہ لینےکا فیصلہ واپس لینے پر بھی بات ہوگی۔

مزیدخبریں