ممکنہ دہشت گردی، یورپین ایوی ایشن سیفٹی ایجنسی نے طیاروں کو پاکستانی حدود میں 24 ہزار فٹ سے کم بلندی پر اڑنے سے روک دیا

30 جنوری 2015
ممکنہ دہشت گردی، یورپین ایوی ایشن سیفٹی ایجنسی نے طیاروں کو پاکستانی حدود میں 24 ہزار فٹ سے کم بلندی پر اڑنے سے روک دیا

اسلام آباد (بی بی سی) یورپی یونین میں پروازوں کے تحفظ کے لئے کام کرنے والی یورپین ایوی ایشن سیفٹی ایجنسی نے ممکنہ شدت پسند حملوں کے خدشے کی وجہ سے طیاروں کو پاکستانی فضائی حدود میں چوبیس ہزار فٹ سے کم بلندی پر اڑنے سے متنبہ کیا ہے تاہم، وزیرِاعظم کے مشیر برائے ایوی ایشن شجاعت عظیم کا کہنا ہے کہ پاکستان کو اس سلسلے میں آگاہ نہیں کیا گیا، نہ ہی وجہ بتائی گئی ہے۔ یورپی یونین میں پروازوں کے تحفظ کے لئے کام کرنے والی یورپین ایوی ایشن سیفٹی ایجنسی یعنی ایسا نے اعلان کیا ہے کہ فرانسیسی سول ایوی ایشن اتھارٹی نے ایئر لائنز کو پاکستان میں چوبیس ہزار فٹ کی بلندی سے نیچے اڑنے سے منع کیا ہے خصوصاً لاہور اور کراچی کی فضائی حدود میں۔ یہ تنبیہ ایسا نے بائیس جنوری کو ایک اطلاع نامہ کے ذریعے جاری کی ہے۔ ایسا کا مزید کہنا ہے کہ تمام بین الاقوامی پروازوں کو اس بارے میں توجہ دلائی جا رہی ہے کہ پاکستان سے اور اس کی فضائی حدود سے گزرنے والی پروازوں کو ممکنہ شدت پسند حملوں کے باعث انتہائی احتیاط کرنی چاہیے تاہم وزیراعظم کے مشیر برائے ایوی ایشن شجاعت عظیم نے بی بی سی سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ نہ فرانس اور نہ ہی ایسا نے سکیورٹی کے حوالے سے کوئی معلومات فراہم کی ہیں۔ پاکستان میں تمام قومی اور بین الاقوامی پروازیں معمول کے مطابق چل رہی ہیں اور کسی قسم کے شدت پسند حملے کی تازہ اطلاع نہیں ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ہوائی جہازوں کا تحفظ اہمیت کا حامل ہے اور اگر کوئی ایسی بات ہوتی، تو میڈیا کو ضرور بتائی جاتی۔ ایسا ہو سکتا ہے کہ فرانس یا یورپی ایجنسی کو کسی ڈرون طیارے کی پرواز کے بارے میں اطلاع ہو، کیونکہ چوبیس ہزار فٹ سے نیچے وہی اڑتے ہیں۔
یورپین ایجنسی

مری بکل دے وچ چور ....

فاضل چیف جسٹس کے گذشتہ روز کے ریمارکس معنی خیز ہیں۔ کیا توہین عدالت کا مرتکب ...