اردو میڈیم اور یکساں نصاب تعلیم رائج کیا جائے: جماعت اسلامی

30 جنوری 2015

لاہور (سپیشل رپورٹر) جماعت اسلامی پنجاب کی صوبائی مجلس شوریٰ کا اجلاس پارلیمانی لیڈر پنجاب اسمبلی و امیر جماعت اسلامی پنجاب ڈاکٹر سید وسیم اختر کی زیر صدارت گزشتہ روز منصورہ لاہور میں ہوا جس میں تعلیمی مسائل پر قرار داد متفقہ طور پر منظور کی گئی صوبے بھر میں یکساں نظام تعلیم رائج کیا جائے قومی زبان (اردو) کو مستقل طور پر ذریعہ تعلیم بنایا جائے اور انگریزی کے جبری نفاذ کو فی الفور واپس لیا جائے آئین پاکستان کے آرٹیکل نمبر 31 اور ایجوکیشن ایکٹ 1976ء کو تعلیمی پالیسی کا حصہ بنایا جائے جس کی رو سے نصابی درستی کتب میں اسلام کے خلاف کوئی مواد شامل نہیں کیا جائے گا آئین پاکستان کے آرٹیکل نمبر 31 اور ایجوکیشن ایکٹ 1976ء کو تعلیمی پالیسی کا حصہ بنایا جائے جس کی رو سے نصابی درسی کتب میں اسلام کے خلاف کوئی مواد شامل نہیں کیا جائے گا آئین پاکستان  کے آرٹیکل 25 اے کے تحت 5 تا 16 سال کی عمر کے تمام بچے اور بچیوں کی لازمی مفت تعلیم کیلئے فنڈز مختص کئے جائیں طلبہ کے سکولوں میں خواتین اور طالبات کے سکولوں میں مرد اساتذہ کی تعیناتی کے حکم کو واپس لیا جائے۔