سی پیک قومی منصوبہ، اس کو ہر صورت کامیاب بنانا ہے:احسن اقبال 

Apr 30, 2018 | 22:14

ویب ڈیسک

 وفاقی وزیر ترقی و منصوبہ بندی احسن اقبال نے کہا ہے کہ وہ سی پیک قومی منصوبہ ہے اس ہر صورت کامیاب بنانا ہے، حکومت گوادر کو صاف پانی کی فراہمی کے لیے معاونت کر رہی ہے۔ اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ گوادر میں عوام کی مشکلات کا فوری طور پر ازالہ کیا جانا ضروری ہے اس حوالے سے حال ہی میں ایک معاہدہ ہوا جس کے تحت فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن وہاں ڈیسیلینیشن پلانٹ لگائے گی لیکن گوادر پورٹ اتھارٹی نے بتایا ہے کہ وہ 2لاکھ گیلن یومیہ پانی فوری طور پر فراہم کر سکتے ہیں ،اگر حکومت بلوچستان ان کے ساتھ واٹر پرچیز ایگریمنٹ کر لے میں بلوچستان جا رہا ہوں ہم کوشش کریں گے کہ بلوچستان کی حکومت دو لاکھ گیلن یومیہ پانی فوری طور پر حاصل کرے تا کہ مقامی آبادی کو پانی کی کمی پورا کرنے میں مدد ملے ،شادی خیل اور ساوک ڈیموں کو پائپ کے ذریعے گوادر سے منسلک کرنے کا منصوبہ بھی 90فیصد مکمل ہو چکا ہے اور دوسرے میں ڈھائی ملین گیلن پانی کی گنجائش ہے ساتھ ہی ایکنک نے پانچ ملین گیلن یومیہ واٹر ڈیسیلینیشن پلانٹ کی بھی منظوری دے دی ہے، ہم حکومت بلوچستان سے التجا کر رہے ہیں کہ وہ اس کی ضروریات پوری کرے تا کہ اس کو فوری شروع کیا جائے ،وفاقی حکومت گوادر کے لوگوں کے لیے تعاون کر رہی ہے ،ہمارے پاس پانچ ملین یومیہ واٹر پلانٹ کے لیے پیسے موجود ہیں اور جونہی حکومت بلوچستان اس میں بڈنگ کی کاروائی مکمل کرے ہم بھرپور تعاون کریں گے، مجھے امید ہے کہ اگلے چھ سے آٹھ ماہ میں گوادر میں پانی کی صورتحال میں نمایاں بہتری آئے گی، اگلے سال گوادر میں پانی کا مسئلہ نہیں ہونا چاہیے، ہمارے لیے بڑی تشویش کی بات ہے کافی عرصہ گزرنے کے باوجود بجلی کے 300میگاواٹ پلانٹ کے لیے بلوچستان حکومت کی طرف سے زمین فراہم نہیں کی گئی میں، کوئٹہ ہزارہ کمیونٹی کے ساتھ ہونیوالی ناانصافی پر اظہار یکجہتی بھی کروں گا اور شہید ہونیوالے پولیس اہلکاروں کے لواحقین کے ساتھ بھی یکجہتی کروں گا،بلوچستان بالخصوص گوادر میں ترقیاتی منصوبوں پر بھی نظر ثانی کریں گے۔ چینی حکام کے ساتھ ہونیوالی بات چیت میں بسمیہ خضدار اور کوئٹہ ژوب سڑکوں کے منصوبوں کی منظوری کو تیز کرنے پر اظہار خیال ہوا چونکہ یہ سی پیک میں منظور ہونے تھے اور اس کی فنانسنگ چائنہ کی طرف سے ہونی ہے ،ہم چاہتے ہیں ان سڑکوں کا آغاز فوری طور پر کیا جائے اور اس حوالے سے چائنہ پر زور دیا گیا ہے اسکے علاوہ میرپور، مظفر آباد، مانسہرہ اور گلگت چترال شندور نوکنڈی پنجگور سڑکوں کا بھی جائزہ لیا ہے ۔ سی پیک ہمارے مستقبل کا منصوبہ ہے اس کو ہم نے ہر قیمت پر کامیاب بنانا ہے تا کہ پاکستان اپنے اصل ہدف ٹاپ 2025اکنامی میں شامل ہو۔

مزیدخبریں