شعبہ ایمرجنسی اینڈ ڈیزاسٹر مینجمنٹ کو جدید خطوط پر استوارکریں گے، انصر عزیز

29 مئی 2017

اسلام آباد (اے پی پی) میئر اسلام آباد وچیئرمین سی ڈی اے نے کہا کہ میٹرو پولیٹین کارپوریشن اسلام آباد(ایم سی آئی) کے شعبہ ایمرجنسی اینڈ ڈیزاسٹر مینجمنٹ کو جدید خطوط پر استوار کرنے کے لیے ٹھوس اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔ ایم سی آئی کی ڈائریکٹوریٹ ایمرجنسی و ڈیزاسٹر مینجمنٹ کو مزید فعال و موئثربنانے کے ساتھ ساتھ اپ گریڈ کیا جائے گا تاکہ کسی بھی قدرتی آفت یا ہنگامی صورتحال سے نبردآزما ہوا جا سکے۔ میئر اسلام آباد و چیئرمین سی ڈی اے شیخ انصر عزیز نے ان خیالات کا اظہارسی ڈی اے ہیڈ کوارٹرز میں منعقد ہ جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں سی ڈی اے اور ایم سی آئی کے سینئر افسران بھی موجود تھے۔اجلاس میں ایمرجنسی اینڈ ڈیزاسٹر مینجمنٹ ڈائریکٹوریٹ کی گذشتہ ہفتہ کی کارکردگی کا جائزہ لیا گیا۔اس ضمن میں میئر اسلام آباد و چیئرمین سی ڈی اے شیخ انصر عزیز نے اپنے خیالا ت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایمرجنسی و ڈیزاسٹر مینجمنٹ ڈائریکٹوریٹ کی کارکردگی پیشہ ور انہ صلاحیتوں اور تکنیکی مہارتوں کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ میٹرو پولیٹین کارپوریشن اسلام آباد(ایم سی آئی) کے ایمرجنسی اینڈ ڈیزاسٹر مینجمنٹ ڈائریکٹوریٹ کی صلاحیتوں میں مزید اضافہ کے لیے اس کو مزید موثئر اور ٹھوس اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ ایمر جنسی و ڈیزاسٹر مینجمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے بہتر اور موئثر اقدامات اٹھائے ہیں جس سے ڈائریکٹوریٹ کی کارکردگی میں مزید بہتری آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ ایمرجنسی اینڈ ڈزاسٹر مینجمنٹ کے متعلقہ افسران اور ملازمین جو دوسرے شعبوں میں اپنے فرائض انجام دے رہے تھے ان کو اس شعبہ میں واپس ٹرانسفر کر دیا گیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اس شعبے میں بہتری کے پیشِ نظر خصوصی انتظامات کے ذریعے پیشہ ورانہ تربیت میں اضافے کے لیے متعدد ٹریننگ پروگرام تر تیب دینے کے علاوہ مزےد مشینری بھی مہیا کی جائے گی۔اس موقع پر اجلا س کو بتایا گیا کہ 10 سے 23 اپریل 2017 ءکے دوران79 ایمر جنسی کالز موصول ہوئیںجن پر فوری عمل درآمد کر کے بڑے نقصان سے بچایا گیا۔ موصول ہونے والی کالوں میں سے 29 کالیں گرین علاقوں میں آگ لگنے، بجلی سے لگنے والی آگ کے متعلق، 02 کالےں بجلی کی تاروں ، ،05کالیں گھر میں لگنے والی آگ سے متعلق، 06 کالیں دکان، ریسٹورنٹ، فیکٹری اور پلازہ مےں لگنے والی آگ جبکہ 03 کالیں گاڑےوں مےں لگنے والی آگ سے متعلق تھےں جن کو فوری طورپر موقع پر پہنچ کر قابو پا کر بڑے نقصان کو بچا لیا گیا۔31 مختلف قسموں کی ریسکیو بشمول پرندوں اور جانوروںسے متعلق کالیں موصول ہوئیں جنہیں فوری دور کیا گیا۔اجلاس کو بتایاگیا کہ یہ موصول ہونے والی کالیں مختلف علاقوںسیکٹر G-6/2 ، I-10/3 ، H-8 واپڈا سٹاف کالج، F-6/3, ، G-8/4 ، بہارہ کہو، علی پور سترہ میل، I-9/2 ، G-9/2 ،I-8 ، نزدسعودی عرب ایمبیسی،راول ڈیم، F-6/3 ، غوری ٹاﺅن، F-10/4 ، روز گارڈن پارک، E-12/2 ، پنڈ بھگوال، F-10/1، سوہان سٹاپ ، I-12 ، G-11 مرکز، I-8/4 ، نزد سپورٹ کمپلیکس، G-7/3-4 ، نزد میرٹ ہوٹل، F-7/1 ، I-9/2 ، I-10/3 ، I-9/3 ، G-14/3، E-8 ، F-8/3 ، بلیو ایریائ، بری امام، ایف نائن پارک، H-11 نزد پولیس اکیڈیمی، پشاور موڑ، I-10/3 پی ٹی سی ایل آفس، شہزاد ٹاﺅن، ضیاءمسجد، سہالہ روڈ، منال ہوٹل، سپر مارکیٹ، بنی گالہ، ترلائی سٹاپ، مارگلہ ہلز، آئی جے پی روڈ، فیصل مسجد اور سیکٹر I-8/3 سے موصول ہوئیں۔ متذکرہ بالا دورانیہ کے دوران27 مختلف مقامات پر مختلف محکموں کی درخواست پر متعدد اہم پروگراموں کے موقع پر حفاظتی اقدام کے طور پر فائر و ریسکیو کی نفری اور گاڑیاں تعینات کی گئیں۔میئر اسلام آباد و چیئرمین سی ڈی اے شیخ انصر عزیز نے ایمرجنسی و ڈیزاسٹر مینجمنٹ کیمتذکرہ بالا دورانیہ میں کارکردگی کے جائزہ کے دوران متعلقہ افسران کو ہدایت کی کہ شعبے کے افسران اور عملہ کی تکنیکی مہارتوں کی مقامی اور بین الاقوامی سطح پر جدید تربیتی پروگراموں میں شرکت کو یقینی بنایا جائے تاکہ عملہ و افسران جدید تکنیکی مہارتوں اور ٹیکنالوجی سے استفادہ کے بعد کسی بھی ناگہانی صورتحال پر قابو پاسکیں۔ میئر اسلام آباد و چیئرمین سی ڈی اے نے مزید ہدایت کی کہ کسی بھی حادثہ کی صورت میں حفاظتی واحتیاطی تدابیرسے عوام کی مکمل آگاہی کے لیے بھی اقدامات اٹھائے جائےں۔