سحری و افطاری میں لوڈ شیڈنگ جاری،2افراد گرمی سے جاں بحق

29 مئی 2017

اسلام آباد/لاہور( وقائع نگار خصوصی/ خبرنگارخصوصی / نامہ نگاران ) حکومتی اعلانات دھرے کے دھرے رہ گئے ، سحر و افطار میں بھی بجلی کی لوڈشیڈنگ جاری، مساجد اور گھروں میں وضو کیلئے پانی تک ختم ہو گیا ساہیوال میں گرمی اتوار کے روز پھر 2افراد جاں بحق جبکہ درجنوں زخمی ہو گئے ۔ کراچی وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے گزشتہ رات شہر قائد سمیت سندھ کے مختلف شہروں میں بجلی کی طویل اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا نوٹس لیتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت کی جانب سے سندھ کے عوام کے ساتھ زیادتی کی جارہی ہے۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ کے الیکٹرک، حیسکو اور سیسکو نے رمضان میں لوڈ شیڈنگ میں کمی اور سحر و افطار کے اوقات میں میں لوڈ شیڈنگ نہ کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی لیکن اس کے باوجود گزشتہ رات کراچی سمیت سندھ کے کئی شہروں میں طویل اور غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کر کے عوام کو پریشان کیا گیا۔ مراد علی شاہ نے کہا کہ وفاقی حکومت کا سندھ کے ساتھ رویہ ٹھیک نہیںوفاق کی سے صوبے کے عوام کے ساتھ زیادتی کی جا رہی ہے۔بجلی کے بڑے بریک ڈاﺅن کے باعث شہر قائد سمیت زیریں سندھ تاریکی میں ڈوب گیا تھا لیکن اب بجلی کی فراہمی بحال ہونا شروع ہو گئی ۔ ترجمان کے الیکٹرک کے مطابقبجلی کے طویل بریک ڈان کے بعد کراچی کے مختلف علاقوں میں بجلی کی فراہمی شروع ہو گئی ۔ ترجمان کے مطابق گلشنِ اقبال، گلستانِ جوہر، گلشنِ حدید، ایف بی ایریا کے کچھ علاقوں میں بجلی بحال کردی گئی ہے ۔کراچی میں بجلی کی بندش کے بعد شہربھر کے پمپنگ اسٹیشن بند ہوگئے جس سے پانی کا بحران بھی پیدا ہو گیا تھا۔ اس حوالے سے واٹر بورڈ حکام کا کہنا ہے کہ لوڈ شیڈنگ کے باعث شہر بھر کے پمپنگ اسٹیشن مکمل طور پر بند ہیں اور پپری، حب اور نارتھ ایسٹ کراچی پمپنگ اسٹیشن پر پمپنگ بھی معطل ہے جس کے باعث شہر کو 12 کروڑ گیلن پانی فراہم نہیں کیا جاسکا۔گزشتہ رات بجلی کے بریک ڈان کے باعث کراچی کے مختلف علاقے گلستان جوہر، گلشن اقبال ،نارتھ ناظم آباد ، اورنگی ٹاون، لیاقت آباد ، کھارادر،کیماڑی،شاہ فیصل کالونی، ملیر، ایئرپورٹ سمیت متعدد علاقوں میں بجلی غائب ہونے کے باعث شہریوں نے اندھیرے میں روزہ رکھا ، بہت سے تو سحری سے ہی محروم رہ گئے۔ملیر کے مختلف علاقوں کے علاوہ معین آباد، النور، سرسید ٹاون، نارتھ کراچی، سعود آباد، سپرہائی وے میں بھی بجلی غائب رہی۔سندھ کے دوسرے بڑے شہر حیدرآباد، میرپورخاص ، جامشوروسمیت دیگراضلاع میں بھی سحری کے وقت بجلی کا بڑا بریک ڈاون ہو گیا۔حیسکو ریجن کے13اضلاع کے76 گرڈ اسٹیشن بند ہوگئے، شہریوں نے موم بتیوں کی روشنی میں سحری کی۔ترجمان حیسکو محمد صادق کا کہنا ہے حیسکو ریجن کے13اضلاع کے76 گرڈاسٹیشن بند ہوئے تھے ۔ذرائع این ٹی ڈی سی کے مطابق جامشورو کے3پاور ہاوس رات 3بجے سے پہلے بند ہوئے تھے۔ ٹنڈوالہ یار، مٹیاری اور دیگراضلاع میں بھی شہریوں نے موم بتی کی روشنی میں سحری کی۔تاہم اب ا ن کا دعوی ہے کہ 76 گرڈ اسٹیشن میں سے22گرڈ اسٹیشنوں پربجلی بحال کردی گئی ۔ادھر جامشورو میں ہائی ٹرانسمیشن لائن ٹرپ ہونے کے باعث کراچی میں بجلی کی بندش سے شہر بھر کے پمپنگ اسٹیشن بند ہوگئے جس سے پانی کی فراہمی تعطل کا شکار رہی ۔تفصیلات کے مطابق ہفتے اوراتوارکی درمیانی شب جامشورو میں ہائی ٹرانسمیشن لائن ٹرپ ہونے کے باعث کراچی میں بجلی کی بندش سے شہر بھر کے پمپنگ اسٹیشن بند ہوگئے جس کی وجہ سے اتوار کے روز شہرمیں پانی کی فراہمی تعطل کا شکار ہوگئی اور بیشترعلاقوں میں پانی فراہم نہ ہوسکا۔پیپری ،حب اور نارتھ ایسٹ کراچی پمپنگ اسٹیشن پرلوڈ شیڈنگ کے باعث پمپنگ معطل اور شہر بھر کے پمپنگ اسٹیشن مکمل طورپر بندرہے ،گزشتہ روز ہونے والے بریک ڈاو¿ن سے شہربھری میں 150ملین گیلن پانی کی فراہمی ممکن نہ ہوسکی ۔ترجمان واٹربورڈ کے مطابق اتور کے روز کراچی کے بیشتر علاقوں میں پانی کی فراہمی ممکن نہ ہوسکی،بجلی کے اچانک بریک ڈاو¿ن سے واٹر بورڈ کی تنصیبات متاثر ہوتی ہیں۔جبکہ لوڈشیڈنگ کی وجہ سے شہر کے ایسے علاقوں میں پانی کی فراہمی بھی شدید متاثر ہوئی ہے جو بلندی پر اوردوردراز مقامات پر واقع ہیں۔اسلام آباد سے نوائے وقت رپورٹ کے مطابق رمضان المبارک کے پہلے پندرہ دنوں میں ملک کے بیشتر علاقوں میں موسم گرم اور خشک رہے گا تا ہم آخری15روز قبل از مون سون بارشوں کی وجہ سے موسم خوشگوار ہو جائیگا۔ تا ہم آخری پندرہ دنوں میں بارشوں کے دو یا تین سلسلوں سے درجہ حرارت میں کمی آئیگی جس سے روزہ داروں کو سہولت حاصل ہو گی۔ ایکسوال پر انہوں نے کہا کہ ابتدائی پندرہ روزوں تک بارش کے ایک دو سلسلے آ سکتے ہیں۔ علاوہ ازیں ملک بھر خاص طور پر میدانی علاقے گرمی کی شدید لپیٹ میں ہیں، اس قیامت خیز گرمی میں درجہ حرارت 52ڈگری تک پہنچ گیا ہے۔ بلوچستان کے شہر تربت میں درجہ حرارت 53.5ڈگری کو چھو گیا ، دادو میں اڑتالیس ، رحیم یار خان اور بھکر میں درجہ حرارت چھیالیس ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا ہے۔ لاڑکانہ میں درجہ حرارت پینتالیس اور ملتان میں چوالیس ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ کراچی اور لاہور میں ہیٹ ویو کی صورتحال دکھائی دے رہی ہے۔ کراچی میں درجہ حرارت پینتیس ڈگری ہے لیکن احساس تینتالیس ڈگری جیسا ہے اسی طرح لاہور میں اڑتیس ڈگری سینٹی گریڈ ہے لیکن اس کا احساس تینتالیس ڈگری کے برار ہے۔ اسلام آباد سے اے این پی کے مطابق وزارت پانی و بجلی نے دعویٰ کیا کہ ملک میں بجلی کی پیداوار 17ہزار چار سو میگا واٹ کی ریکارڈ سطح عبور کر رگئی ہے۔ پانی و بجلی کی وزارت کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ سحری اور افطار کے اوقات میں ملک کے تمام حصوں میں بلا طعطل بجلی فراہم کی جا رہی ہے۔ ملک میں کہیں بھی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ نہیں ہو رہی ۔ جن علاقوں میں بجلی چوری ہوتی ہے وہاں لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ زیادہ ہے۔ ساہیوال سے نامہ نگار کے مطابق ضلع ساہیوال میں گرمی کی شدت برقرار رہی لولگنے اور شدید گرمی سے مزید2افراد جاں بحق ہو گئے ۔ مزید براں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کے خلاف احتجاج کے دوران مالا کنڈ میں توڑ پھوڑ کا معاملہ ایم این اے جنید خان اور مشیر وزیراعلیٰ سمیت 7 کارکن ضمانت پر رہا ہو گئے۔ ملزموں پر احتجاج کے دوران واپڈا دفتر میں توڑ پھوڑ کا الزام ہے۔ پنڈی بھٹیاں سے نامہ نگار کے مطابق رمضان المبارک میں بھی لوڈشیڈنگ زیادہ ہوئی۔ گرمی سے روزہ داروں کا تمام دن برا حال رہا۔ نمازوں کے اوقات میں بھی لوڈشیڈنگ جاری رہی اور نمازیوں کو وضو کیلئے پانی بھی دستیاب نہ ہوسکا۔ وہاڑی میں سحر، افطار اور تراویح کے اوقات میں بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ جاری رہی جس سے شہریوں کو شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑا۔ نارنگ منڈی سے نامہ نگار کے مطابق بجلی کی بدترین لوڈشیڈنگ نے روزے داروں کا برا حال کردیا جس سے درجنوں روزہ دار بے ہوش ہوگئے۔ شہریوں نے حکومت سے صورتحال کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ دوسری طرف اسلام آباد سے وقائع نگار خصوصی کے مطابق ترجمان وزارت پانی و بجلی نے کہاکہ ملک کے زیادہ تر حصوں میں سحر کے دوران بجلی کی فراہمی بلا تعطل جاری رہی۔ سحر کے وقت 97 فیصد شہری اور 85 فیصد دیہی علاقوں میں بجلی کی فراہمی بلا تعطل جاری رہی ۔ حیسکو کے ٹرپنگ والے علاقے میں 2 گھنٹے کے اندر بجلی بحال کر دی گئی ‘ ملک میں بجلی کی پیداوار 17400 میگا واٹ رہی ۔ اتوار کو ترجمان وزارت پانی و بجلی نے اپنے بیان میں کہا کہ ملک کے زیادہ تر حصوں میں سحر کے دوران بجلی کی فراہمی بلا تعطل جاری رہی۔ سحر کے وقت 97 فیصد شہری اور 85 فیصد دیہی علاقوں میں بجلی کی فراہمی بلا تعطل جاری رہی ۔ حیسکو کے ٹرپنگ والے علاقے میں 2 گھنٹے کے اندر بجلی بحال کی گئی۔ وزارت پانی و بجلی کے مطابق ہفتہ شام 6:30 سے صبح 4 بجے تک ملک میں زیرو لوڈ شیڈنگ رہی۔ ملک میں بجلی کی پیداوار 17400 میگا واٹ رہی۔ ادھر محکمہ موسمیات ن کہا ہے کہ رمضان المبارک کے پہلے پندرہ روز موسم گرم اور خشک رہے گا تاہم اگلے پندرہ روز میں بارشوں کے دو یا تین سلسلوں سے درجہ حرارت میں کمی آئیگی جس سے روزہ داروں کو سہولت حاصل ہوگی۔