ترقی کے دعویداروں نے بجٹ میں روایات کو برقرار رکھا: مخدوم احمد محمود

29 مئی 2017

لاہور (خبر نگار) پاکستان پیپلز پارٹی جنوبی پنجاب کے صدر و سابق گورنر پنجاب مخدوم سید احمد محمود نے وفاقی حکومت کی طرف سے آئندہ مالی سال کیلئے پیش کئے جانے والے بجٹ پر سخت تنقید اور اسے مسترد کرتے ہوئے اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ ترقی و خوشحالی کے دعوے داروں نے اپنی سابقہ روایات برقرار رکھتے ہوئے ورلڈ بنک اور آئی ایم ایف کے ایجنڈے پر کاربند رہتے ہوئے ایک مرتبہ پھر خودکش دہشت گرد کا کردار ادا کر کے عوام کو بڑی خوبصورتی کے ساتھ مفلوج اور زندہ درگور کرنے کے اعداد و شمار کی نظر کر دیا ہے۔ پارٹی کی فیڈرل کونسل کے رکن عبدالقادر شاہین اور میڈیا کوآرڈینیٹر جنوبی پنجاب محمد سلیم مغل کے ہمراہ ایک مشترکہ بیان میں ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے گزشتہ مالی سال کے بجٹ کی طرح آئندہ مالی سال کے بجٹ کو بھی کاغذات کا ایک پلندہ بنا کر قوم کو بے وقوف اور گمراہ کرنے کی کوشش کی ہے۔ جس میں عوام کو کوئی ریلیف نہیں دیا گیا۔ غربت کے باعث غریب متوسط طبقہ اپنے بچوں کو جان سے مار کر خود سوزی کرنے پر مجبور ہونگے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت معاشی حقائق پر پردہ ڈال رہی ہے۔ پالیسیاں ناکام ہو چکی ہیں۔ وزیر خزانہ نے غربت، بیروزگاری کا جواب دیا، نہ معاشی صورتحال میں تبدیلی کی، یہ اکلوتی حکومت ہو گی۔ جو تجارت کے غیر متوازن ہونے پر خوشیاں منا رہی ہے۔ جن کے دور اقتدار میں خسارہ قرضے بڑھ گئے، جس کا واضح ثبوت وفاقی حکومت نے مالی سال کے پہلے 9 ماہ میں قرضوں کے بوجھ میں 1194 ارب روپے ہے۔ جبکہ حکومت کی طرف سے دی جانے والی ضمانتوں کا حجم 838 ارب روپے ہے۔